لہو ہمارا بھلا نہ دینا لیفٹینٹ ناصر شہید ۔شہید کا مظفرآباد سے تعلق رھا اور فرائض کی بجا آوری میں جنوبی وزیرستان میں شہید ہوئے تھے

  • IMG-20210905-WA0005.jpg
  • IMG-20210905-WA0004.jpg
  • IMG-20210905-WA0003.jpg
  • IMG-20210905-WA0013.jpg
  • IMG-20210905-WA0012.jpg
  • IMG-20210905-WA0011.jpg
  • IMG-20210905-WA0010.jpg
  • IMG-20210905-WA0009.jpg
  • IMG-20210905-WA0008.jpg
  • IMG-20210905-WA0007.jpg
  • IMG-20210905-WA0006.jpg

❤️لہو ہمارا بھلا نہ دینا ❤️ تحریر: لیاقت بشیر فاروقی لیفٹینٹ ناصر شہید کا پورا نام ناصر خالد (شہید 2020) لیفٹینٹ پاک آرمی تھا۔
والد کا نام خالد نصیر سلہریا (شہید 2003) انسپکٹر آزاد کشمیر پولیس جبکہ دادا نصیر خان سلہریا (ریٹائرڈ آفیسر) پاک آرمی تھا۔شہید کا آبائی علاقہ باغ حال لوئر طارق آباد، مظفرآباد آزاد کشمیر ہے۔
ناصر شہید نے ابتدائی دینی تعلیم مظفرآباد کی مشہور دینی درس گاہ جامعہ اشاعت القرآن شاہناڑہ سے حاصل کی۔
لیفٹنٹ ناصر خالد شہید نے PMA 137 LC سے پاکستان آرمی میں کمیشن حاصل کیا۔
لیفٹنٹ ناصر خالد شہید رائل ملٹری اکیڈمی آسٹریلیا سے گریجویٹ تھے۔لیفٹینٹ ناصر خالد شہید کا ایک اور بھائی سہیل خالد PMA 142 LC سے ہے اور پاک آرمی میں بحیثیت لیفٹیننٹ ملک کی خدمت کر رہا ہے۔لیفٹینٹ ناصر خالد شہید رزمک نارتھ وزیرستان میں اپنے دو ساتھیوں سمیت صبح 09:50 پر آئی ای ڈی دھماکے میں شہید ہوئے۔ آپ کی شہادت کے بعد 6 دہشت گرد زندہ پکڑے گئے۔شہداء کی نماز جنازہ راولپنڈی اور اس کے بعد یونیورسٹی کالج گراونڈ مظفرآباد میں ادا کی گی۔شہید کے جنازے کی آمد کے موقع پر چئیرمین وزیراعظم عملدرآمد کمیشن زاہد امین کاشف،خواجہ فاروق احمد،بیداری ویلفئر فاونڈیش، احساس ویلفئر سوسائٹی، سہارا ویلفئیر ڈیزاسٹر رسک منیجمنٹ کمیٹی سمیت طلبہ محاذ مظفرآباد نے شان شیان استقبال کیا اور پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں۔نماز جنازہ میں تمام مکاتب فکر سمیت سیاسی سماجی مزہبی تجارتی صحافتی زعماء عوام علاقہ،وزراء حکومت،سیکرٹریز حکومت،سربراہان ادارہ جات پاک فوج کے آفیسران نے کثیر تعداد میں شرکت کی اور پورے قومی و فوجی اعزاز کے ساتھ شھید کو رخصت کیا۔نماز جنازہ شہید کے روحانی استاد قاری مولانا عبدالمالک نے پڑھایا،اس موقع پر وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے غمناک آنکھوں سے شہید کے لواحقین اور والدہ کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا تھا جبکہ موجودہ وزیراعظم آزاد کشمیر صدر پاکستان تحریک انصاف آزادکشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری اور ان کے تنظیمی عہدہ دران نے بھی انکے ہمراہ نماز جنازہ اور شہید کی تدفین میں حصہ لیا تھا۔پاک فوج کے چاک و چوبند دستے نے شہید کو گارڈ آف آنر پیش کیا تھا اور چیف آف آرمی سٹاف،جی او سی مری،کمانڈر ٹرپل ون برگیڈ،ون اے کے برگیڈ،فائیو اے کے برگیڈ کی جانب سے پھولوں کے گلدستے چڑھائے گئے تھے۔ اس موقع پر ہر سر فخر سے بلند دکھائ دیا تھا۔سب لوگوں نے شہید کے خاندان کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے اسکی بہادر ماں کو سلام پیش کیا تھا۔اس وقت عوام نے حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ شہید کے نام پر فوری طور پر کسی تعلیمی ادارے کو منسوب کرتے ہوئے ایک یادگار تعمیر کی جائے جو نسل نو کو آزادئ،جذبہ حریت اور شہادت کا سبق یاد دلاتی رہے۔ڈویژنل صدر انٹر نیشنل جرنلسٹ کونسل آف پاکستان آزادکشمیر لیاقت بشیر فاروقی نے شہید کو خراج عقیدت پیش کیا اور مرکزی صدر انٹر نیشنل جرنلسٹ کونسل آف پاکستان آزادکشمیر سردار ممتاز انقلابی کی جانب سے اہل خانہ کو تعزیت کا پیغام پہنچاتے ہوے کہا کہ
اللہ پاک شہداء کے درجات بلند فرمائے۔اور تمام اہل خانہ بلخصوص ماں اور بھائی کو صبر جمیل عطا فرمائے۔ شہید تم سے یہ کہہ رہے ہیں لہو ہمارا بھلا نہ دینا۔قسم ہے تم کو اے سرفروشو، لہو ہمارا بھلا نہ دینا۔آج ایک بار پھر وزیراعظم پاکستان چئیرمن پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے شہداء وطن کے ساتھ اظہار یک جہتی کے لیے یوم دفاع پاکستان کے موقع پر جس طرح شہداے وطن کے خاندانوں کو عزت آفزائی دینے کے لیے تقاریب کا اہتمام کروایا ہے اس کو مدنظر رکھتے ہوئے وفاقی وزیر حکومت علی محمد خان نے ریاستی ہیرو شھید لفٹیننٹ ناصر حسین خالد سلہریہ شھید سمیت دفاع وطن کے لیے قیمتی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے شھداء کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے اللہ تعالیٰ کے ناموں کا ورد کرتے ہوئے اس کا ثواب شھید کو بخشا،انھوں نے کہا مرنا تو ہے ہی کیوں نہ شھادت کی موت حاصل کیا جائے،مسلمان کبھی موت سے نہیں ڈرتا،گزشتہ سال شھید کے غم میں شرکت کے لیے آیا تھا آج ہمیشہ کے لیے زندہ ہونے والے کی خوشی میں شریک ہوں شھید ناصر کشمیر ہی کا نہیں پاکستان کا بھی بیٹا ہے،اسکے قیمتی لہو کو ہمیشہ یاد رکھیں گے،سید علی گیلانی کو بھی شھید قرار دیتے ہیں،ریاست پاکستان آزاد کشمیر سید علی گیلانی کی سوچ کے ساتھ کھڑے ہیں،پاکستان کا بچہ بچہ کشمیریوں اور شھید سید علی گیلانی کی سوچ اور نظریہ کے ساتھ کھڑے ہیں اور رہیں گے،پاکستان بھر سمیت جگہ جگہ غائبانہ نمازِجنازہ ادا کر رہے ہیں،جلد سری نگر میں نماز عید ادا کریں گے گورنر ہاؤس میں پاکستان کا پرچم لہرائیں گے،پاکستان کی سرزمین کسی غیر مسلم کو استعمال نہیں کرنے دی جائے گی،میرے خاندان میں شہیدوں غازیوں کی قربانیاں شامل ہیں،تمام شھیدوں کو سلام پیش کرتا ہوں،شھداء کے والدین کا جذبہ ہمارا سرمایہ حیات ہے پاکستان کے لیے ہماری ہزار جانیں حاضر ہیں،غلامی رسول کے لیے ہزار جانیں حاضر ہیں،وفاقی وزیر نے خود شھید کی بلندی درجات کے لیے رقت آمیز دعا کروائی شرکاء تقریب کی آنکھوں میں آنسو جاری ہو گئے۔باوجود انتظار کے سابق وزیراعظم آزاد کشمیر راجا فاروق حیدر خان شریک نہ ہو سکے، یوم دفاع پاکستان کی مناسبت سے شہدائے وطن کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے ریاستی ہیرو لفٹیننٹ ناصر حسین خالد شھید سلہریہ کی لازوال شہادت پر پروقار تقریب کا انعقاد،تقریب کے مہمان خصوصی وفاقی وزیر علی محمد خان تھے جبکہ سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر راجا فاروق حیدر خان سمیت سیاسی سماجی مذہبی تجارتی صحافتی عوامی حلقوں اور شھید ناصر سلہریہ کی والدہ اور دیگر عزیز و اقارب نے شرکت کی،اس موقع پر مقررین نے شھید ناصر حسین خالد سلہریہ کی سوانح حیات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ماں کی تربیت اور ایک شھید کا فرزند ہونے کی وجہ سے بچپن سے ہی شھادت کا جذبہ رکھتےتھے،رائل ملٹری اکیڈمی کالج آسٹریلیا سے متعدد ایوارڈز حاصل کئے۔41میڈیم ائیر ڈیفنس میں شامل ہونے کے بعد چھ ماہ مختلف آپریشن میں حصہ لیا اور شاندار طریقے سے فرائض سر انجام دیے،6جولای 2020میں آپ کی صلاحیتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے آپریشن میں انتخاب کیا گیا،اپکی بہترین صلاحیتیں اور آپکی بہادری پر تمغہ شجاعت سے نوازہ گیا،آپ نے 3ستمبر 2020 کو جام شہادت نوش کیا،آپکی شھادت کے بعد آسٹریلیا میں بھی تقریبات کا انعقاد کیا گیا اور آپکی تصویر نصب کی گئی،تقریب سے قبل شرکاء تقریب نے قرآن خوانی،درود و سلام اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں گلہائے عقیدت پیش کیے،تقریب کے سٹیج سیکرٹری سینیر صحافی سعید الرحمن صدیقی تھے،اس موقع پر شھید کی والدہ رخسانہ یعقوب نے کہا کہ میرا نہیں ناصر قوم کا بیٹا تھا میں ہر اس دل کا شکریہ ادا کرتی ہوں جو شھید کی محبت میں یہاں آئے ہیں،تقریب کے اختتام پر شرکاء میں لنگر بھی تقسیم کیاگیا

۔

شیئر کریں

Top