تحریک انصاف میں پی پی اور جماعت والوں کی سوچ کی جنگ شروع

  • img_20180601_1853051942226431033709872.jpg
  • img_20180601_1856171424968081236899983.jpg
  • img_20180601_1851044150931706855625426.jpg

تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری نے اعلان کیا ہے کہ اور یا مقبول جان کی جگہ چکوال سے مسلم لیگ نون کے سابق رہنما اور معروف کالم نگار اور اینکر ایاز امیر پی ٹی آئی کے پنجاب سے نگران وزیر اعلی کے ایک اور امیدوار ہیں جبکہ پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں محمود الرشید کا کہنا ہے کہ عمران خان نے انہیں اور یا مقبول جان کا نام دیا ہے

تحریک انصاف میں جماعت اسلامی سے آئے ہوئے افراد اور مشرف اور پیپلز پارٹی کے رہنماؤں میں ایک خاموش چپقلش اس مرحلے پر کھل کر سامنے آگئی ہے میاں محمود الرشید اس گروپ سے ہیں جو جماعت اسلامی میں رہ چکے ہیں

جبکہ فواد چوہدری سمیت کئی درجن پیپلزپارٹی کے سابق رہنما ہیں اور آئندہ کچھ عرصہ میں یہ ٹکرایا شدت اختیار کر جائے گا

پنجاب اسمبلی کے سابق اپوزیشن لیڈر محمود الرشید نے دو نئے نام اوریامقبول جان اور یعقوب طاہر اظہار دیئے جب کہ پی ٹی آئی کے مرکزی ترجمان فواد چوہدری نے اوریا مقبول جان کا نام ہٹا کر ایازامیر کو نامزد کردیا ہے۔
ادھر عمران خان نے تین اینکروں کے نام دے دئے لیکن 22 سالا رفاقت کے دعوے دار ہارون رشید کا نام نہیںدیا حالانکہ وہ دنیا ٹی وی کے اس پروگرام کے اینکر ہیں جس کو دو اینکروں کے نام عمران خان نے دئے سوشل میڈیا ہر میں نت ڈھاکہ ڈوبتے دیکھا خے مصنف بریگیڈیئر صدیق سالک کے صاحبزادے سرمد سالک نے اس پر ہارون رشید سے تعزیت کی اور طنزیہ لکھا کہ اس پر انہیں عمران خان سے احتجاج کرنا چاہیئے اس ہر صحافی محسن رضا خان نے جواب دیا کہ
‏حیرت کی بات ہے عمران خان کی کسی کا نام دے کر بے عزت کرتا ہے اور کسی کا نام دے کر بے عزت کرتا ہے دنیا ٹی وی کے ایک پروگرام کے تین میں دو اینکروں کے نام دے دئے اور تیسرے کو چھوڑ دیا یہ ہے بوٹ چاٹنے کا انجام

نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کی تقرری کے لئے اسپیکر پنجاب اسمبلی رانا اقبال اور سابق اپوزیشن لیڈرمحمودالرشید کی ملاقات ہوئی اور پی ٹی آئی کی جانب سے اسپیکر رانا اقبال کو مزید دو نام دے دیئے گئے تاہم کسی پر اتفاق نہ ہوسکا۔

ملاقات کے بعد پی ٹی آئی کے میاں محمود الرشید نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کے لئے اوریا مقبول جان اور یعقوب طاہر اظہار کے نام دئیے ہیں، ملاقات میں طے ہوا ہے کہ اتوار تک معاملے کو طے کرلیں گے اور جو نام دئیے ہیں کسی ایک پر اتفاق کرسکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ بروقت انتخابات کا انعقاد بہت ضروری ہے اور ہم سب کا بھی اتفاق ہے کہ انتخابات 60 دن کے اندر شیڈول کے تحت ہوں۔

دنیا ٹی وی

دنیا ٹی وی

دوسری جانب تحریک انصاف کے مرکزی ترجمان فواد چوہدری نے پنجاب اسمبلی کے سابق اپوزیشن لیڈر محمود الرشید کے ناموں سے اختلاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہماری جماعت کی جانب سے پنجاب کے نگراں وزیراعلیٰ کے لئے 3 نام حتمی ہیں جن میں حسن عسکری، ایازامیر، یعقوب طاہر اظہار شامل ہیں۔

اس سے پہلے
نگراں وزیر اعلیٰ پنجاب کے لئے تحریک انصاف کی مشاورت میں ممتاز تجزیہ کار ڈاکٹر حسن عسکری اور سابق آئی جی خیبرپختون خوا ناصر درانی کے ناموں پر اتفاق کرلیا گیا ہے۔ اس حوالے سے پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے تصدیق کی ہے کہ اپوزیشن کی جانب سے شہباز شریف کو دو نئے نام بھجوا دیئے گئے ہیں اور اگر یہ معاملہ آج حل نہ ہوا تو فیصلہ الیکشن کمیشن کرے گا۔ لیکن ناصر درانی نے معزرت کرلی تھی

Comments

comments