سینیٹ الیکشن سے قبل یافوری بعدعمران خان خودپارلیمنٹ توڑنے کافیصلہ کرسکتے ہیں،راناثنااللہ خاں

مسلم لیگ ن پنجاب کے صدرراناثنااللہ خاں نے کہاہے کہ سینیٹ الیکشن سے قبل یافوری بعدعمران خان خودپارلیمنٹ توڑنے کافیصلہ کرسکتے ہیں۔کیونکہ سینیٹ الیکشن کے بعدوہ اخلاقی طورپربھی وزیراعظم نہیں رہیں گے۔یوسف رضاگیلانی کے منتخب ہونے کے بعد”کنواں صاف ہوگا”اُنہیں صرف اپنے اتحادیوں اورارکان پربے وفائی کاخطرہ نہیں لانگ مارچ میں عوام کابھی خطرہ ہے۔۔میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ این اے 75ڈسکہ کے ضمنی الیکشن کے دوران ہونے والی فائرنگ اور2افرادکے قتل پر الیکشن کمیشن کوآئی جی پولیس پنجاب سمیت ضلعی انتظامیہ کوطلب کرسکتاہے الیکشن عملہ کے اغواکاروں ، فائرنگ اورپلاننگ کرنے والوں کے خلاف مقدمہ درج کرکے اُنہیں گرفتارکرکے منظرعام پرلایاجائے۔الیکشن شفاف ہوتے توپی ٹی آئی کی ضمانت ضبط ہوجاتی پورے حلقہ کے دوبارہ الیکشن کروائے جائیں توپتہ چل جائے گاکس جماعت کوزیادہ ووٹ کاسٹ ہوتے ہیںاُنہوں نے کہاکہ الیکشن کمیشن رپورٹ میں سب کچھ واضح ہوگیا ہے۔مسلم لیگ ن کے سینئررہنماپرویزرشیدکوانصاف نہیں ملادوہری شہریت کی وجہ سے قومی اسمبلی کی رکنیت اورسینیٹرکے امیدوارفیصل واوڈاکوقانونی طورپرنااہل قراردیاجاناچاہئے تھامگرکلب انتظامیہ کوپیسے جمع کروانے کے لئے جانے والے پرویزرشیدسے وصول نہیں کئے گئے جس سے ثابت ہوتا ہے کہ منصوبہ بندی کے تحت اُن کے کاغذات مستردکئے گئے ہیں۔

Comments

comments