معاون خصوصی ندیم افضل چن مستعفی

  • IMG-20210113-WA0107.jpg

وفاقی کابینہ میں پھوٹ پڑ گئی حق پرست اور چاپلوس گروپ میں ٹویٹر پر جنگ کے بعد وزیراعظم کےمعاون خصوصی ندیم افضل چن معاون خصوصی وزیراعظم کے ترجمان اور پارٹی سے مستعفی
وفاقی کابینہ کے گزشتہ روز کے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان کی تنقید کارگر ثابت ہوئی، نتیجہ برآمد ہونا شروع ہوگیا معاون خصوصی و ترجمان ندیم افضل چن مستعفی ہوگئے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق ندیم افضل چن نے ہزارہ برادری کے مقتولین کے ورثا سے ملاقات کیلئے بروقت بلوچستان نہ جانے کے معاملے پر وزیراعظم پر تنقید کی تھی۔ کابینہ کے گزشتہ روز کے اجلاس میں وزیراعظم نے ان معاملات پر اظہار خیال بھی کیا اور کہاکہ حکومتی پالیسیوں کے دفاع کیلئے موثر کردارادا کیا جائے۔ اس حوالے سے سرکاری وٹس ایپ گروپ میں تنقید سے گریز کیا مشورہ بھی دیا گیا تھا۔ وزراء ، مشیروں، معاونین خصوصی کو وزیراعظم نے نام لئے بغیر وارننگ دی تھی۔ وزیراعظم کی اس تنقید کے حوالے سے نتیجہ نکلنا شروع ہوگیا ہے ندیم افضل چن مستعفی ہوگئے رپورٹ کے مطابق ندیم افضل چن کے حکومت سے کئی امور پر اختلافات تھے جس کے بعد وہ مستعفی ہوگئے۔ ندیم افضل چن ہزارہ برادری کے پاس وزیراعظم کے تاخیر سے جانے پر ناقد تھے۔8 جنوری کو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر جاری بیان میں ندیم افضل چن نے کہا تھا کہ اے بے یار و مدد گار معصوم مزدوروں کی لاشوں، میں شرمندہ ہوں۔دوسری جانب ندیم افضل چن نے اپنے استعفے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعظم کے ترجمان کے عہدے سے مستعفی ہوگیا ہوں۔خیال رہے کہ ندیم افضل چن نے 18 اپریل 2018 کو پیپلزپارٹی چھوڑ کر تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی تھی۔

Comments

comments