*2 کو واشنگٹن چار کو نیویارک 6 کو مشی گن 8 کو کیلیفورنیا اور 10 کو پورا امریکہ بند کروا دوں گا* *‏‎وائٹ ہاوس کی دیواروں پر گیلی شلواریں لٹکانے کا وقت آگیا ہے۔* *ڈونلڈ ٹرمپ*

  • IMG-20210107-WA0043.jpg

*2 کو واشنگٹن چار کو نیویارک 6 کو مشی گن 8 کو کیلیفورنیا اور 10 کو پورا امریکہ بند کروا دوں گا*
*‏‎وائٹ ہاوس کی دیواروں پر گیلی شلواریں لٹکانے کا وقت آگیا ہے۔*
*ڈونلڈ ٹرمپ*

*امریکی کانگریس میں افراتفری پھیل گئی،مظاہرین اندر داخل،خاتون کو گولی مار دی گئی*

*‏‎امریکہ میں ہنگامہ کرنے والوں کو سزا ملتی ہے*
*ہمارے ہاں وزیر اعظم بنا دیا جاتا ہے*

*‏امریکہ میں جو کچھ ہو رہا پاکستانی دوست اسے پارلیمنٹ پر حملے سے جوڑ رہے مگر آپ ایک بنیادی فرق دیکھئے کہ ہمارا میڈیا اس وقت تماش بین کا کردار ادا کر رہا تھا*
*نیازی کی تقاریر نان کٹ دیکھا رہا تھا*
*جبکہ امریکی میڈیا مجموعی طور پر مزمت کر رہا ٹویٹر ، فیس بک نے ٹرمپ کے بیانات ہٹا دئیے ۔*
*‏ٹرمپ کی بیڈ لک ہے کہ اسکے پاس سہولتکاری اور پراپیگنڈے کے لیے ” ARY” سما ” اور 92 نیوز جیسے چینل نہیں ہیں*

*‏فیسبک اور ٹویٹر نے ٹرمپ کو بلاک کردیا اور اس کے کچھ ٹویٹ تو ڈیلیٹ ہی کردئے۔*
*ڈیموکریٹ ممبر25thترمیم لانے پر زور دے رہے ہیں جسے ٹرمپ کو وقت سے پہلے آج ہی نکالا جاسکتا ہے*

*ٹرمپ ایک سوچ کانام ہےجوجھوٹ،تشدد اور مکاری کی بناپراقتدار میں رہنا چاہتے ہیں*

*عمران خان اور ڈونلڈ ٹرمپ کی شخصیات میں غصہ، یوٹرن،غیریقینی سمیت کچھ مشترک باتیں ہیں‘ عمران خان اور ٹرمپ دونوں کی سوچ ہے کہ جو ان کے ساتھ نہیں وہ دشمن ہے۔*

*پاکستان کے مشہور تجزیہ نگار و کالم نویس حامد میر لکھتے ہیں*
*بدتمیز، غصیلا، ضدی، گھمنڈی اور متعصب لیکن اپنے حامیوں کا ہیرو۔*
*ایک ایسا ہیرو جس نے سیاسی مخالفین کو غدار قرار دیا اور نفرت کو اپنی سیاست کی بنیاد بنایا۔*
*آپ سمجھ گئے ہوں گے۔ نفرتوں کی سیاست کرنے والے اُس شخص کا نام ڈونلڈ ٹرمپ تھا جو اب امریکہ کا سابق صدر بن چکا ہے۔*
*ٹرمپ امریکہ کی تاریخ کا پہلا صدر تھا جس نے اپنے سیاسی مخالفین سمیت مختلف اخبارات اور ٹی وی چینلز پر کم از کم پچیس مرتبہ غداری کے جھوٹے الزامات لگائے۔ کوئی ایک الزام بھی ثابت نہ کر سکا۔*
*عمران خان کی طرح*

*پہلے سال اُنہوں نے امریکی ٹی وی چینل سی این این پر فیک نیوز پھیلانے کا الزام لگایا اور اِس چینل کے بائیکاٹ کی اپیل کی۔*
*2020ء کے صدارتی الیکشن کے باقاعدہ نتائج سامنے آنے سے پہلے ہی ٹرمپ نے اپنی فتح کا اعلان کردیا اور یہ اعلان اِس سال کی سب سے بڑی فیک نیوز بن گیا۔ وہ ہٹ دھرم ٹرمپ جو دوسروں پر جھوٹے الزامات لگا کر اُن کی عزتیں اچھالتا تھا، آج خود پوری دنیا میں فیک نیوز کی علامت بن چکا ہے۔*
*ٹرمپ صرف ایک فرد کا نہیں بلکہ ایک رویےّ کا نام ہے۔*
*آج دنیا کے مختلف ممالک میں ہمیں عمران ٹرمپ جیسی سیاست کرنے والے لوگ اہم عہدوں پر براجمان نظر آتے ہیں جو سیاسی مخالفین پر بغیر ثبوت کے غداری کے الزامات لگاتے ہیں،*
*آزادیٔ اظہار کو دبانے کی کوشش کرتے ہیں، مذہبی، نسلی اور لسانی تعصب کی بنیاد پر اقلیتوں کے حقوق غصب کرتے ہیں اور اپنے معاشروں میں تقسیم پیدا کر رہے ہیں۔*
*کچھ سالوں میں ہی عمران خان نے پاکستانی معاشرے کو تقسیم کر کے رکھ دیا*
*ٹرمپ کی شکست دنیا کے مختلف خطوں کے کئی ممالک میں دائیں بازو کی مفاد پرستانہ سیاست کے زوال کا آغاز ہے۔ اِس قسم کی سیاست کرنے والے لیڈر صرف جھوٹے وعدے کرتے ہیں۔ عمران خان اس کی زندہ مثال آپ کے سامنے ہے*
*عوام کو ظلم و ناانصافی اور مہنگائی سے نجات کے خواب دکھاتے ہیں اور حکمران بننے کے بعد خود ظالم بن جاتے ہیں۔ غریبوں پر مہنگائی مسلط کر دیتے ہیں اور پھر اپنی نااہلی اور کرپشن کو چھپانے کے لئے مخالفین پر کرپشن کے الزامات لگاتے ہیں۔*
*جب دوسروں پر کرپشن کے الزامات ثابت نہ ہو سکیں تو پھر ٹرمپ اور عمران خان جیسے لیڈروں کی آخری پناہ گاہ حب الوطنی بنتی ہے۔ وہ بہت بڑے پیٹریاٹ بن جاتے ہیں اور سیاسی مخالفین کو ملک دشمن قرار دینے لگتے ہیں۔*
*ٹرمپ نے اپنے سیاسی مخالف باراک اوباما کو صرف اسلئے غدار قرار دے دیا کیونکہ اُن کی پارٹی مختلف تھی اور اُن کا رنگ مختلف تھا۔*

*ٹرمپ نے نیویارک ٹائمز اور واشنگٹن پوسٹ پر بھی غداری کا الزام لگا دیا اور اُن کی دیکھا دیکھی کئی جمہوری ممالک کی رائٹ ونگ حکومتوں نے بھی میڈیا کو دبانے کی کوششیں شروع کردیں لیکن میڈیا کو عبرت کا نشان بنانے کی کوشش کرنے والا ٹرمپ آج خود عبرت کا نشان بن چکا ہے بہت جلدی عمران خان بھی بننے والا ہے۔*
*دوسری طرف ٹرمپ نے امریکی صدارتی الیکشن کے نتائج کو عدالت میں چیلنج کرنے کا اعلان کردیا ہے ٹرمپ کے حمایتی ایوان نمائندگان پر چڑھ دوڑے ہیں۔ اُس کا الزام ہے کہ الیکشن میں دھاندلی ہوئی ہے۔ ہو سکتا ہے وہ کنٹینر پر چڑھ جائیں اور دھرنوں کا اعلان کردیں لیکن وائٹ ہائوس سے نکلنے کے بعد اُن کے لئے جھوٹ بولنا مشکل ہو جائے گا۔*
*وہ جو بھی جھوٹ بولیں گے تو ٹوئٹر سمیت تمام امریکی ٹی وی چینلز دنیا کو یہ بھی بتائیں گے کہ ٹرمپ جھوٹا ہے۔ جس طرح آج کل عمران خان کے دوست اینکر پرسن بھی بتا رہے ہیں کہ عمران خان جھوٹا ہے ہے*
*جھوٹ نے اِس دنیا کو تقسیم اور غیر محفوظ کیا ہے*
*وقت آگیا ہے کہ دنیا کے ہر خطے میں میڈیا ٹرمپ جیسے جھوٹوں اور گھمنڈیوں کے سامنے سینہ تان کر کھڑا ہو جائے اور اُن کا جھوٹ بےنقاب کر کے عوام کو ایسے بدتمیزوں سے نجات دلائے۔*

*بد تمیز غصیلہ گھمنڈی اور متعصب لیکن اپنے حامیوں کا ہیرو*
*عمران خان کے حامی بھی بہت بڑے جاھل ہیں*
*جو عمران خان کی ہر بات پر واہ واہ کرتے ہیں*
*عمران خان جھوٹ بولے اس کے جاھل پیروکار کہتے ہیں واہ کیا بات کر دی خان صاحب نے*
*عمران خان کو منہ پر ہاتھ پھیرے تو کہتے ہیں واہ کیا بات کر دی*
*عمران خان کہےمیں نے کسی کو چھوڑنا نہیں کہتے ہیں واہ کیا بات کر دی خان صاحب نے*
*عمران خان کہے سال کے بارہ موسم ہے اس کے جاھل فالور کہتے ہیں واہ خان صاحب نے کیا بات کر دی*
*عمران خان جیسے لیڈر اپنی منافقت جھوٹ اور انتشار پھیلانے کے لیے ایسےجاہل فالور کا استعمال کرتے ہیں*
*جس کی مثال آپ چند سالوں سے دیکھتے آرہے ہیں*
*عمران خان اور پاکستان تحریک انصاف نے ایسے جاھل لوگ بنا دیے ہیں کہ جو عمران خان کے جھوٹ کو تسلیم کرتے ہیں*
*جو عمران خان کے کہنے پر باقی پاکستانیوں کو غدار کہتے ہیں*
*جو حکومت پر تنقید کرنے پر لوگوں کو گالیاں نکالتے ھیں*
*لیکن ایسے اندھے ہیں کہ ان کو حکومت کی کرپشن چور بازاری نااہلی نالائقی کچھ بھی نظر نہیں آتا*
*یہ بالکل دولے شاہ کے چوہوں کی طرح ہیں ان کے دماغ نکال دیے ہیں اور جو کچھ عمران خان پی ٹی آئی سوشل میڈیا ان کو کہتا ہے اس پر عمل کرتے ہیں کیونکہ بچارے سوچنے سمجھنے کی صلاحیت نہیں رکھتے*

*ٹرمپ اور عمران جیسے کردار جو معاشرے میں میں جھوٹ منافقت انتشار اور تقسیم پیدا کرتے ہیں ان کو ہم نے اپنی سوچ تعلیم اور شعور سے شکست دینا ہے جس طرح امریکی عوام نے شکست دی ہے*

Comments

comments