بھارت کی طرف سے شہید کیے جانے والے تین کشمیریوں کی میتیں پاکستان کے حوالے کرنے سے انکار کی مزمت بھارتی قابض فوج کی جانب سے 3 کشمیریوں کو مارواۓ عدالت قتل کرنے کی شدید مزمت

  • IMG_20210105_130432.jpg

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ کا اہم بیان

بھارت کی طرف سے شہید کیے جانے والے تین کشمیریوں کی میتیں پاکستان کے حوالے کرنے سے انکار کی مزمت کرتے ہیں ترجمان دفترخارجہ پاکستان انتیس دسمبر دو ہزار بیس کو بھارتی قابض فوج کی جانب سے تین کشمیریوں کو مارواۓ عدالت قتل کرنے کی شدید مزمت کرتا ہے
تین شہید ہونے والے کشمیریوں کے لواحقین اور پڑوسیوں نے واضح کیا ہے کہ اعجاز مقبول غنی ، زبیر احمد لون اور اطہر مشتاق وانی نے سرینگر کا دورہ کیا تینوں کشمیری نوجوان بھارتی ریاستی دہشت گردی کا شانہ بنے تینوں شہداء کو دفنانے کے حوالے سے میتیں لواحقین کے حوالے نہ کرنا بھارت کا غیر انسانی سلوک ہے بھارت کی جانب سے اس طرح کے منفی ہتھ کنڈے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کو دبانے کی کوشش ہے بھارتی قابض افواج اپنے ناپاک عزاٸم میں کامیاب نہیں ہوں گی یہ معاملہ دنیا بھر کے باضمیر افراد کے لیے لمحہ فکریہ ہے
اخلاقی طور پر دیوالیہ آر ایس ایس بے جی پی حکومت منفی ہتھ کنڈوں سے باز رکھنا چاہیے پاکستان نے بار بار زور دیا ہے کہ بھارتی قابض فوج کی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر اقوام متحدہ کے انکواٸری کمیشن کو تحقیقات کرنی چاہییں اس حوالہ سےاو ایچ سی ایچ آر نے دو ہزار اٹھارہ اور دو ہزار انیس میں اپنی سفارشات دی تھیں پاکستان اپنے مطالبے کو دہراتا ہے کہ بین الاقوانی سکروٹنی کے تحت کشمیریوں کے مارواۓ عدالت قتل کی تحقیقات کرواٸ جاٸیں تاکہ گھناٶنے جراٸم میں ملوث عناصر کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جاسکے

Comments

comments