سندھ میں آوارہ کتوں کے کاٹنے سے بچائو کا پروگرام نہیں بن سکاپروگرام مکمل تین سال میں ہوگا اسسٹینٹ ایڈووکیٹ جنرل سندھ شہریار مہر

سندھ ہائی کورٹ

آوارہ کتوں کے کاٹنے کی ویکیسن کی عدم فراہمی سے متعلق درخواست

ماسٹر پروگرام فار ربیز کنٹرول سے متعلق اسسٹینٹ ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے جواب جمع کرادیا

عدالت کا درخواست گزار کو جواب کی نقعول فراہم کرنے کا حکم

صبح کیس لگا ہوا ہوتا آپ کیوں نہیں آتے ہیں عدالت کا پروجیکٹ ڈائریکٹر سے استفسار

دسمبر 2020 سے مارچ 2021 تک تمام چیزین کنٹرول کرلیں گے رپورٹ

تین ماہ میں پرائمری سیکشن مکمل ہوگا اسسٹینٹ ایڈووکیٹ جنرل سندھ شہریار مہر

پروگرام مکمل تین سال میں ہوگا اسسٹینٹ ایڈووکیٹ جنرل سندھ شہریار مہر

سندھ لوکل گورئمنٹ ایکٹ 2013 کے بائی لائز بنا لیں عدالت کا ریمارکس

بائی لائز بنانے کے لئے ہمیں تین ماہ کا ٹائم دیا جائے لوکل گورئمنٹ حکام

عدالت نے سیکریٹری لوکل گورئمنٹ ڈیڑھ ماہ میں بائی لائز بنانے کی ہدایت کردی

عدالت نے درخواستوں کی مزید سماعت 16 دسمبر تک ملتوی کردی

سندھ ہائی کورٹ

آوارہ کتوں کے کاٹنے کے بڑھتے ہوئے واقعات کا معاملہ

ویکسین کی عدم فراہمی اور واقعات کی روک تھام سے متعلق درخواست کی سماعت

سوا ارب روپے سے زائد کا پی سی ون تیار کر لیا گیا، اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل

پروگرام کے تحت آوارہ کتوں کو کنٹرول کیا جائے گا، اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل

یہ بتائیں سندھ ریبیز کنٹرول پروگرام کے پروجیکٹ ڈائریکٹر کہاں ہیں ؟ عدالت

پروجیکٹ ڈائریکٹر سندھ ریبیز کنٹرول پروگرام کو گیارہ بجے طلب کرلیا ہے

Comments

comments