ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال کے عملے کی غفلت، 22سالہ جوان زندگی کی بازی ہار گیا۔

  • IMG-20201121-WA0077.jpg

ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال کے عملے کی غفلت، 22سالہ جوان زندگی کی بازی ہار گیا۔

ڈیرہ اسماعیل خانڈسٹر کٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے نیفرالوجی یونٹ میں 22سالہ نوجوان ڈاکٹر ز اور عملہ کی غفلت سے انتقال کرگیا ۔ والدین نے ا علیٰ حکام سے انکو ائری کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔
ڈیرہ اسما عیل خان کے علاقہ مدنی ٹاؤن کا رہائشی 22سالہ نوجوان محمد آفاق گزشتہ کچھ عرصہ سے گردوں کے عارضہ میں مبتلا تھا اسے جمعرات کے روز ڈسٹرکٹ ہیڈ کو ارٹر ہسپتال کے نیفرالونی وارڈ میں ڈائیلاسز کے لئے لایا گیا ۔
محمد آفاق کے والد غلام سرور نے ”اعتدال ”کو بتایا کہ محمد آفاق ہسپتال خود چل کرآیا اور اس کی طبیعت مکمل طور پر ٹھیک تھی دوران ڈائیلا سز بجلی بندہوگئی اور ہم نے ہسپتال انتظامیہ کو فوری طور پر اگاہ کیاکہ دوان ڈائیلا سز بجلی کی سپلائی معطل ہوگئی ہے اس وقت دیگر مریضوں کا بھی یونٹ میں ڈئیلاسز جاری تھا ۔
لیکن ہمارے بیٹے کی طبیعت بگڑنے لگی توہم نے وارڈ میں موجودہ ڈاکٹر ز اور نرسز کو اگاہ کیا ، ڈاکٹر اور نرسز نے آنے کی بجائے ہمیں کیا کہ آپ لوگ ڈائیلاسز مشین کو انگلی کے ذریعہ مینول طریقے سے گھما کر چلاتے رہیں۔ انہوں نے کیا کہ ہم نے یہ بھی کیا لیکن میرے بیٹے کی طبیعت نہیں سنبھل رہی تھی ۔ میری اہلیہ اور میں نے شور مچایا کہ جنریٹرچلاکرڈائیلاسز کا عمل مکمل کیا جائے ۔
ڈاکٹر ز اور نرسز جو موقع پر موجود تھیں انہوں نے ہماری ایک بھی نہیں سنی اور وارڈ میں آنے سے گریز کرتے رہے۔ جنریٹر کے متعلق ہسپتال عملہ نے بتایا کہ جنریٹر فنگشنل نہیں ہے۔ اس دوران میرے بیٹے کی سانسیں اکھڑنے لگیں اور ہم نے ہسپتال عملے کی منتیں کیں کہ خدارا میرے بیٹے کی جان بچائیں جب اس کی طبیعت مکمل طور پر بگڑ گئی تو عملے نے اس وقت آکر اکسیجن لگایا ۔لیکن اس وقت وہ تک مکمل طور پر بے ہوش ہوچکاتھا اور اس دوران اس کی موت واقع ہوگئی ان کا کہنا تھا کہ میرے بیٹے کو قتل کیا گیا ہے جس کی ذمہ دار ڈاکٹر ز اور ہسپتال انتظامیہ ہے ۔ ہم باربار چلا رہے تھے لیکن ہماری بات کوئی نسنے کو تیار نہیں تھا ۔ میرے بیٹے کے مرنے کے بعد ڈاکٹر ز اکر مغدرت کی غلام سرور نے وزیر اعلیٰ خیبر پختو نخواہ کمشنر ڈیرہ ، ڈپٹی کمشنر ڈیرہ اور دیگر متعلقہ حکام سے مطالیہ کیا ہے کہ ان کے بیٹے کی موت کی تحقیقات کی جائیں اور ہسپتال انتظامیہ ار متعلقہ سٹاف کے خلاف تادیبی کاروائی کی جائے ۔ ڈیرہ کے شہر ی اور معززین کا فی عرصہ سے ہسپتال میں صحت کی سہولیات کی فراہمی پر سوالات اٹھارہے تھے اور ان کا کہنا تھا کہ ہسپتال میں سہولیات کی فراہمی کی بجائے سیاسی بھریتوں کو زیادہ فوکس کیا جارہا ہے ۔شہریوں کا کہنا ہے ہسپتال صحت کی سہولیات کی فراہمی کی بجائے ایمپلایمنٹ ایکسچینج بن گیا ہے جس سے ہسپتال میں شہریوں کو صحت کی سہولیات میسر نہیں آرہی ہیں ۔
ہسپتال ایم ٹی آئی نظام کے بعد ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال میں بڑے پیمانے پر سیاسی بھریتاں کی گئی تھیں جنہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا ۔
…..

Comments

comments