نااہل فرد کو ملک پہ مسلط کرنے کا فیصلہ فوج کا نہیں چند کرداروں کا تھا نواز شریف

پاکستان کے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد میجر جنرل فیض حمید کو ترقی دینے پر سوال اٹھا دیا  اور الزام لگایا کہ وہ مسلسل سیاست میں مداخلت کر رہے ہیں کوئٹہ میں پی ڈی ایم کے تیسرے بڑے جلسے سے وڈیو لنک پر لندن سے خطاب کررہے تھے
نواز شریف کے خطاب کو الیکٹرونک میڈیا پر دکھانے پر پیمرا نے پابندی لگا رکھی ہے
کوئٹہ میں انٹرنیٹ اور موبائل سروس معطل رکھی گئی لیکن اس کے باوجود وڈیو لنک پر خطاب ہوا

میاں محمد نواز شریف نے کہا کہ  ‏عمران خان صاحب آپ یہ نہ سمجھیں آپ بچ جائیں گے آپ بھی جیل جائیں گے جواب دینا ہوگا ہر کام کا  ‏کیا سپریم کورٹ نے فیض آباد دھرنے میں آپ کے خلاف فیصلہ نہیں دیا؟ اس کے باوجود آپ کو ترقی دی گئی عالیشان عہدے پہ تعینات کیا گیا، آپ نے کیا سیاست میں مداخلت نہ کرنے کا حلف نہیں لیا تھا ؟ آپ سیاست میں مسلسل مداخلت کر رہے ہیں. ‏پاکستانی فوج ہماری اپنی فوج ہے انہیں عزت دیں لیکن جب آئین کی بالادستی اور قانون کی حکمرانی کا آجائے تو پھر وہاں کوئی سمجھوتہ نہ کریں کوئی فوج اپنی عوام کیخلاف نہیں لڑتی
‏انہی لوگوں نے اکبر بگٹی کو شہید کیا ۔انہی لوگوں کو شہادت سے قبل بینظیر بھٹو نے خط میں اپنے لیے خطرہ قرار دیا ۔
نواز شریف آئین شکنی برداشت نہیں کرتا وہ ڈکٹیشن نہیں لیتا.
‏نواز شریف نے آج سپریم کورٹ کے ایک جج پہ بھی دباؤ کی وجہ سے اپنے خلاف دئیے گئے فیصلے میں کردار ادا کرنے کا سنگین الزام عائد کر دیا. ‏نواز شریف نے فوج کے افسران و جوانوں کو حلف کی پاسداری کرنے ، سول سروس افسران کو غیر قانونی احکامات نہ ماننے اور پاکستانی عوام کو آئین کی بالا دستی ، قانون کی حکمرانی کے لئے کوئی سمجھوتہ نہ کرنے کا   ‏عمران خان آپ کو ، علیمہ خان کو زمان پارک ، بنی گالہ بارے حساب دینا ہوگا ، تم اور تمہارے ہر کرپٹ ساتھی کو حساب دینا ہوگا ، نواز شریف پیغام دے دیا
‏نواز شریف نے فوج ‏‏نواز شریف نے فوج کے افسران و جوانوں کو حلف کی پاسداری کرنے ، سول سروس افسران کو غیر قانونی احکامات نہ ماننے اور پاکستانی عوام کو آئین کی بالا دستی ، قانون کی حکمرانی کے لئے کوئی سمجھوتہ نہ کرنے کا پیغام دے دیا شریف نے فوج کے افسران و جوانوں کو حلف کی پاسداری کرنے ، سول سروس افسران کو غیر قانونی احکامات نہ ماننے اور پاکستانی عوام کو آئین کی بالا دستی ، قانون کی حکمرانی کے لئے کوئی سمجھوتہ نہ کرنے کا پیغام دے دیا افسران و جوانوں کو حلف کی پاسداری کرنے ، سول سروس افسران کو غیر قانونی احکامات نہ ماننے اور پاکستانی عوام کو آئین کی بالا دستی ، قانون کی حکمرانی کے لئے کوئی سمجھوتہ نہ کرنے کا پیغام دے دیا
‏عمران خان آپ کو ، علیمہ خان کو زمان پارک ، بنی گالہ بارے حساب دینا ہوگا ، تم اور تمہارے ہر کرپٹ ساتھی کو حساب دینا ہوگا ،نواز شریف کے جنرل فیض پہ سنگین الزامات کیا سپریم کورٹ نے فیض آباد دھرنے میں آپ کے خلاف فیصلہ نہیں دیا ؟ اس کے باوجود آپ کو ترقی دی گئی عالیشان عہدے پہ تعینات کیا گیا ، آپ نے کیا سیاست میں مداخلت نہ کرنے کا حلف نہیں لیا تھا ؟ آپ سیاست میں مسلسل مداخلت کر رہے ہیں ، ‏کیوں ایک حاضر سروس جج کے گھر جا کر آپ نے اس پہ آئین و قانون کے خلاف فیصلہ دینے کے لئے دباؤ ڈلا، کیوں انہیں وقت سے پہلے اسلام آباد ہائی کورٹ کا چیف جسٹس مقرر کرنے کی پیشکش دی ، دو سال نواز شریف اور مریم نواز کو جیل میں رکھنے کی درخواست کی؟ ‏نااہل فرد کو ملک پہ مسلط کرنے کا فیصلہ فوج کا نہیں چند کرداروں کا تھا ، آج سوالوں کے جواب فوج کو نہیں ان کرداروں کو دینا ہیں ، نواز شریف نے آج بھی آرمی چیف اور ڈی جی آئی کا نام لے دیا ‏انہی لوگوں نے محب وطن اکبر بھٹی کوشہید کیا ،شہید بے نظیر نے اپنے خط میں انہی لوگوں کو نامزد کیا ، فوجی اڈے امریکہ کو انہی لوگوں نے دئیے ، مٹھی بھر لوگوں نے بے شمار فائدے اٹھائے ، مشرف کے اکاؤنٹس میں اربوں روپے پڑے ہوئے ہیں نیب اور عمران خان میں جرات نہیں کہ کاروائی کرے، ‏ان کرداروں نے اپنے احتساب سے بچنے کے لئے بارہ اکتوبر کو اقتدار پہ قبضہ کیا اور ملک میں مارشل لاء لگایا ، پرویز مشرف اور اس کے ساتھی اس میں شامل تھے ، جنہوں نے پی ایم ہاؤس کے جنگلے پھلانگے انہیں بھی بری الذمہ نہیں سمجھتا ، ‏ان کرداروں نے اپنے احتساب سے بچنے کے لئے بارہ اکتوبر کو اقتدار پہ قبضہ کیا اور ملک میں مارشل لاء لگایا ، پرویز مشرف اور اس کے ساتھی اس میں شامل تھے ، جنہوں نے پی ایم ہاؤس کے جنگلے پھلانگے انہیں بھی بری الذمہ نہیں سمجھتا ، ‏کچھ لوگ فوج کا نام استعمال کر کے اپنے مذموم مقاصد پورے کرتے ہیں اور نام فوج کا بدنام کرتے ہیں ، اس لئے میں ایسے لوگوں کے نام لیتا ہوں جن کی سیاہ کاریوں سے فوج کے ادارے کی بدنامی ہوتی ہے، کارگل کا فیصلہ فوج نہیں چند مفاد پرست جرنیلوں کا تھا ، ‏یہ تحریک کسی ادارے کے خلاف نہیں ، پاک فوج کے مقدس ادارے کو اپنے مذموم مقاصد کے لئے استعمال کرنے والوں کے خلاف ہے ، نیچے فوجیوں کو پتہ ہی نہیں ہوتا کہ یہ کردار کیا کر رہے ہیں ، ان سے معصومیت میں ایسے کام لیے جاتے ہیں جن کی بھیانک قیمت ملک کو ادا کرنی پڑتی ہے ، ‏کسی کو خبر نہیں رات کو کس نے آئی جی کو اغواء کیا ، سیکٹر کمانڈر کون ہے وہ کس کی طاقت سے ایف آئی آر کٹواتا ہے، کس کے حکم پہ بیڈ روم کے دروازے توڑے جاتے ہیں ، صوبے کے وزیر اعلی کو معلوم نہیں تو اس سے بڑا صوبے میں حکمران کون ہے ؟ نواز شریف کا کوئٹہ جلسے سے خطاب انہوں نے کہا کہ‏منہ اندھیرے مریم نواز اور کیپٹن صفدر کے کمرے کا دروازہ توڑا گیا ، کیا یہ اخلاقیات اور قدریں رہ گئی ہیں ، اتنا نیچے گر سکتے ہیں ، کراچی واقعے نے ثابت کر دیا کہ ریاست کے اوپر ریاست قائم ہو چکی ہے ، ‏آر ٹی ایس بند کر کے مرضی کے نتائج سنائے گئے ، تاریخ کی بد ترین دھاندلی کر کے نا اہل شخص کو وزیر اعظم کی کرسی پہ بٹھا دیا گیا تاکہ وہ ان کی مرضی کے مطابق کرتب دکھاتا رہے ، ‏نواز شریف کو عبرت کا نمونہ بناتے بناتے آپ سب کو عبرت کا نمونہ بنا دیا ہے ، ‏چند لوگوں کو اپنا مفاد اور اختیار آہ کی مشکلات سے۔ زیادہ عزیز ہے ، آئین اور قانون ان کے آڑے آتا ہے ، نواز شریف ان کو اچھا نہیں لگتا اس کو نکال دیا گیا ، اسے عمر بھر کے لئے نا اہل کردو ، شہباز شریف ، مریم نواز ، حمزہ شہباز سب کو جیل میں ڈال دو ،

Comments

comments