فیصل آباد میں غلط کاری سے انکار کرنے پر سگے باپ اور سوتیلی ماں کا 13 سالہ بیٹی اور 12 سالہ بیٹے پر وحشیانہ تشدد ۔ کمسن بچی کو رسی سے باندھ کر بجلی کے تار اور پائپ سے مارتی رہی میاں بیوی فرار ۔

No video URL found.

فیصل آباد کے علاقے 225 ر۔ب احمد نگر میں غلط کاری سے انکار کرنے پر سگے باپ اور سوتیلی ماں کا تیرہ سالہ بیٹی اور بارہ سالہ بیٹے پر وحشیانہ تشدد ۔ ملزمہ سلمیٰ کمسن بچی کو رسی سے باندھ کر بجلی کے تار اور پائپ سے مارتی رہی ۔ متاثرہ بچے سول ہسپتال منتقل ، جسم پر تشدد کے نشانات ۔ پولیس کے چھاپے پر ملزم میاں بیوی فرار ۔

احمد نگر میں کرائے کے گھر میں مقیم ملزمہ سلمیٰ تیرہ سالہ سوتیلی بیٹی ام حبیبہ کو غلط کاری پر آمادہ کرتی تھی ۔ بچی کے انکار پر ملزمہ نے ہفتے کے روز اسے رسی سے باندھ کر بجلی کے تار اور پائپ سے تشدد کا نشانہ بنایا ۔ ام حبیبہ کے بارہ سالہ بھائی علی رضا کے روکنے پر نشے کے عادی سگے باپ شاہد اور سوتیلی ماں نے اس پر بھی تشدد کیا ۔ معصوم ام حبیبہ نے ہمسائے کے ذریعے اپنی پھوپھی کو فون کروا کے بلایا جس نے محلے داروں کے ساتھ مل کر رسیوں سے بندھے بہن بھائی کو سول اسپتال پہنچایا ۔ اسپتال ذرائع کے مطابق دونوں بچے بہت زیادہ سہمے ہوئے تھے اور ان کے جسموں پر تشدد کے بہت زیادہ نشانات ہیں ۔ملزمان کے خلاف تھانہ صدر پولیس کو درخواست دے دی گئی ۔ پولیس کے چھاپے پر ملزمان پہلے ہی گھر کو تالا لگا کر فرار ہو گئے ۔ تشدد کا شکار معصوم ام حبیبہ نے بتایا کہ اس کی سوتیلی ماں سلمیٰ مردوں کو گھر بلا کر ان کے ساتھ برا کام کرنے کو کہتی تھی ۔ میں نے اسے واسطے دیئے کہ مجھ سے غلط کاری نہ کرواؤ لیکن اس نے مجھے بجلی کے تار اور پائپ سے بہت مارا ہے ۔

Comments

comments