اٹک میں سرکاری افسران نے لوٹ مار کا بازار گرم کر رکھا ہے میجر طاہر صادق

  • 715CBB6F-3B3A-4E16-AF78-8C78E74AED04.jpeg

اٹک ( نامہ نگار ) رکن قومی اسمبلی میجر طاہر صادق نے کہا ہے کہ ملک کے دیگر حصوں کی طرح اٹک میں سرکاری افسران نے لوٹ مار کا بازار گرم کر رکھا ہے اور عوام کرپشن کی لعنت کو جڑ سے اکھاڑنے کیلئے بغیر کسی سفارش اور جھجک کے سرکاری اداروں اور سرکاری افسران کی کرپشن کو بے نقاب کرنے کیلئے انہیں آگاہ کریں بد عنوان سرکاری افسران اور عملہ کو نشان عبرت بنایا جائے گا ان خیالات کا اظہار انہوں نے اٹک میں اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ان کے میڈیا کوارڈینیٹر تنظیم اقبال پاشی ہاشمی ، حاجی ملک خادم حسین سگھوال ، چیئرمین اٹک پریس کلب رجسٹرڈ ندیم رضا خان ، چیئرمین حسن ابدال پریس کلب رجسٹرڈ شہزاد سید ، پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا کے سینئر نمائندگان بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ عوامی شکایات پر انہوں نے سی او ہیلتھ اتھارٹی اٹک کی کرپشن کو بے نقاب کیا ہے تو انہوں نے ہاتھ پاءوں مارنے شروع کر دیئے ہیں تاکہ اٹک میں بدعنوان افسران کی سرپرستی کرنے والی حکومتی شخصیات انہیں اس عہدے پر برقرار اور ان کے خلاف کسی قسم کی کوئی انکوائری نہ ہونے دیں اٹک میں کوئی ایسا محکمہ نہیں جہاں کرپشن عروج پر نہ ہو ، پنجاب میں منظور ہونے والا نیا بلدیاتی نظام جو انتہائی لنگڑا لولہ ، بے کار ترین سسٹم ہے جس میں ضلع اور یونین کونسل کو ختم کر کے ایسا نظام وضع کیا گیا ہے جو عوام کو کسی قسم کی کوئی چیز ڈیلیور نہیں کر سکے گا سپریم کورٹ نے اس کا نوٹس لیا ہے حکومت کو چاہیے کہ جو غریب اور عام آدمی کی فلاح و بہبود کیلئے بہتر ہو وہ نظام وضع کیا جائے جو عوام کو بہتر سہولیات فراہم کر سکتا ہو اقتدار کی نچلی سطح تک منتقلی کا بلدیاتی نظام جو 2001 ء میں قائم کیا گیا زبردست نظام تھا جس کے تحت پورے پاکستان کے تمام اضلاع میں پسماندہ علاقے تعمیر و ترقی کے ایک شاندار دور میں داخل ہوئے صوبائی حکومتوں نے اس نظام کو بہتر کرنے کے بجائے یک جنبش قلم ختم کر کے نت نئے تجربات شروع کیے جو سلسلہ ابھی تک جاری ہے موجودہ بلدیاتی نظام کو تحریک انصاف کی حکومت نے ختم کر کے نیا سسٹم نہیں دیا اور 2 سال کا عرصہ گزر چکا ہے کرونا وائرس کے سلسلہ میں پنجاب میں بلدیاتی ادارے موجود ہوتے تو بہتر انداز میں کرونا وائرس کے سلسلہ میں کیے جانے والے اقدامات کو درست سمت میں پہنچایا جا سکتا تھا تاہم بلدیاتی ادارے نہ ہونے کے سبب تمام نظام سرکاری افسران کے رحم و کرم پر رہا اور انہوں نے جو کچھ کیا وہ سب کے سامنے ہے جس کا کوئی حساب کتاب نہیں لیا گیا پنجاب میں ویلج کونسل اور نیبر ہڈ کے نام پر جو انگریزی کے الفاظ ہیں بلدیاتی نظام وضع کیا گیا ہے اس سے پنجاب بھر میں تحریک انصاف کی حکومت کی نیک نامی پر داغ لگا ہے کہ انہیں ویلیج کونسل جس کا اردو نام موضع کونسل یا گاءوں کونسل اور اسی طرح نیبر ہڈ کا نام ہمسایہ کونسل یا دیگر رکھے جا سکتے تھے اور اس سلسلہ میں پاکستان بھر میں ناموں کا ایک مقابلہ کروایا جا سکتا تھا کہ بہتر نام تجویز کرنے والے کو ایک لاکھ روپے انعام دیا جائے گا تو بہتر نام دستیاب ہو جاتا تاہم ہر کام سرکاری افسران سے کرانے کی ریت دن بدن بڑھتی جا رہی ہے جس کا خمیازہ تحریک انصاف کی حکومت کو بھگتنا پڑے گا انہوں نے کہا کہ ان کی 16 نومبر 2017 ء کو تحریک انصاف میں شمولیت کے موقع پر شہید ملت لیاقت علی خان ہاکی سٹیڈیم میں بڑے جلسہ عام میں جس میں وزیر اعظم عمران خان نے خطاب کیا تھا اس موقع پر پارٹی معاہدہ کے تحت قومی اسمبلی کی 2 اور پنجاب اسمبلی کی ایک نشست دی گئی اور وہ تبدیلی کے نعرے پر تحریک انصاف میں شامل ہوئے تاکہ غریبوں کے مسائل حل ہو سکیں اور وہ آج بھی عوام کی خدمت کر رہے ہیں اور انہیں کوئی پچھتاوا نہیں تاہم عمران خان کو ان کے نا اہل مشیروں نے اس مقام تک پہنچا دیا ہے کہ وہ اس کمیٹی میں شامل ہیں جو پاکستان میں پودے لگانے کے سلسلہ میں قائم کی گئی ہے 10 ارب پودے لگانے کا دعویٰ کرنے والوں نے 2 سالوں میں صرف 3 کروڑ اور چند لاکھ پودے لگائے ہیں اس کام کیلئے نا اہل لوگوں کو اہم عہدے پر فائز کر دیا گیا پودے لگانا مالیوں کا کام ہے حکومت کو متعدد مرتبہ تنبیہ کی گئی ہے کہ بے روزگاری ، مہنگائی ، سرکاری دفاتر میں آئے روز عوام کی ہونے والی تذلیل ، جائز کاموں کیلئے رشوت کا مسلمہٰ اصول جیسے مسائل کا خاتمہ نہ کیا گیا تو اس کے نتاءج خطرناک ثابت ہوں گے اوپر کی کرپشن ضلع اور تحصیل سطح تک پہنچ چکی ہے محکمہ مال ، محکمہ صحت اور دیگر محکمہ جات کرپشن کے گڑھ بن چکے ہیں ہر چیز رشوت کی بنیاد پر ممکن ہو رہی ہے اور بدعنوان عناصر کا مافیا نیچے سے لے کر اوپر تک اپنے پنجے گاڑ چکا ہے انہوں نے خبردار کیا ہے کہ اٹک میں ایسے کام نہیں چلے گا بولیاں لگی ہوئی ہیں ’’ مینو نوٹ ویکھا میرا موڈ بڑیں ‘‘ کا فارمولہ سرکاری دفاتر میں عمل پیرا ہے اور کوئی پوچھنے والا نہیں انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ میجر گروپ میں شمولیت کی وجہ یہ ہے کہ ہم نے اٹک میں عوام کو روزگار ، تعلیم ، صحت ، مواصلات اور زندگی کے ہر شعبہ َ میں ڈیلیور کر کے دکھایا ہے چیف الیکشن کمشنر بہت قابل افسر رہے ہیں اور انہوں نے چیف الیکشن کمشنر کی حیثیت سے بھی اپنے آپ کو منوایا ہے حلقہ بندیوں پر انہیں کوئی اعتراض نہیں تاہم اٹک کو اٹک میں ہی رہنے دیا جائے صوابی یا دیگر اضلاع کے ساتھ لگانے سے گریز کیا جائے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے موسمیاتی تبدیلی ملک امین اسلم ، پی پی پی اور مسلم لیگ ( ن ) کی مدد سے میجر گروپ کے خلاف ضلع بھر میں ایک گروپ تیار کر رہے ہیں تاہم ہمیشہ کی طرح اللہ پاک کے فضل و کرم اور عوام کی حمایت و تائید سے یہ لوگ اس مرتبہ بھی شکست سے دو چار ہوں گے اور ناکامی ان کا مقدر بنے گی ، کامسیٹس یونیورسٹی اٹک کیمپس کے ایک حصہ کو جو چند کنال پر مشتمل ہے پہلے زبردستی خالی کرا کر قرنطینہ سنٹر بنایا گیا اور بعدازاں یہاں پر مدر اینڈ چائلڈ کیئر ہسپتال قائم کرنے کا بورڈ لگا دیا گیا ہے جو اس بلڈنگ سے مطابقت نہیں رکھتا وزیر اعظم عمران نے وزیر اعظم ہاءوس اپنے منشور کے تحت یونیورسٹی کے حوالہ کر دیا اور اسی منشور کے تحت اٹک میں ڈپٹی کمشنر کی عمارت جو 42 کنال سے زائد رقبہ پر مشتمل ہے پر وزیر اعظم کے منشور کے تحت مدر اینڈ چائلڈ کیئر ہسپتال قائم کیا جائے تو زیادہ بہتر ہو گا کیونکہ موجودہ جگہ انتہائی گنجان آباد اور رش والی ہے جہاں ٹریفک جام رہنا معمول ہے اور یہ ہسپتال قائم ہونے سے ٹریفک جام کا عمل مزید بڑھنے کی توقع ہے حکومت نے تیل کی قیمتیں کم کیں جس کا عام آدمی کو کوئی فائدہ نہیں پہنچا اور تیل مارکیٹ سے غائب ہو گیا اور دوبارہ تیل کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا جس کا سلسلہ ہر 15 دن بعد جاری ہے حکومت کے اقدامات سے عام آدمی مستفید نہیں ہو رہا حکومت بجلی کے سلسلہ میں آئی پی پیز سے جو معاہدے کیے اس کا بھی عوام کو فائدہ ہونا چاہیے تھا اصولی طور پر آئی پی پیز سے معاہدے ختم کر کے پانی سے بجلی بنانے اور دیگر وسائل کی طرف توجہ دی جانی چاہیے ، لٹیرے قومی خزانے کو شیر مادر کی طرح لوٹ کر بیرون ملک اثاثے بناتے رہے کبھی ریوڑی والا ، کبھی رکشے والا ، کبھی برف والے کے نام پر اربوں روپے کے لین دین ہوتے رہے سیاسی ، اقتصادی ، مالی اور ہر سطح پر ملک کو تباہی کے دہانے پر پہنچانے میں کسی نے کوئی کسر نہیں اٹھا رکھی عام آدمی نے تحریک انصاف کو تبدیلی اور گزشتہ حکومتوں سے کی جانے والی نفرت کے سبب دل کھول کر پیار کرنے کے علاوہ ووٹ دیئے اور اب عوام اس پیار کا بدلہ مانگ رہے ہیں تاہم نا اہل اور غیر منتخب افراد ڈیلیور کرنے میں بری طرح ناکام ہو چکے ہیں جس کا ثبوت ان کی 2 سالہ ناقص کارکردگی ہے اٹک میں امن و امان کی صورتحال انتہائی ناگفتہ بہ ہو چکی ہے پولیس مکمل طور پر ناکام ہے ، چوری ، ڈکیتی اور راہ زنی کی وارداتوں میں اضافہ ہو چکا ہے اور لوگ عدم تحفظ کا شکار ہیں علاقہ کے سینکڑوں لوگوں کی ڈی پی او آفس میں آمد پر انہوں نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر اٹک سید خالد ہمدانی سے ان کے دفتر میں معززین علاقہ کے ہمراہ ملاقات کر کے داخلی خارجی راستوں پر پکٹ ، بولیانوال اور دیگر علاقوں میں چوری ، ڈکیتی اور راہ زنی کی وارداتوں میں قابو پانے کے سلسلہ میں کامیاب مذاکرات کیے ڈی پی او نے ان کی تجاویز کو مثبت قرار دیتے ہوئے فوری طور پر احکامات جاری کر دیئے ہیں جس کا علاقہ کے لوگوں نے خیر مقدم کیا ہے اور اس کے نتاءج بھی جلد سامنے آئیں گے پولیس کی گشت میں اضافہ کر دیا گیا ہے اللہ پاک کے فضل و کرم ، والدین ، غریبوں ، مظلوموں ، بے بسوں ، بیوہ ، یتیموں اور بے سہارا افراد کی دعاءوں کے سبب لوگوں کے مسائل حل کیے ہیں اور خدمت کا یہ سفر میجر گروپ کا ہر کارکن ادا کر رہا ہے ضلع اٹک سے وڈیرہ ازم کا خاتمہ کر دیا گیا ہے بلدیہ اٹک جس کے ایڈمنسٹریٹر ڈپٹی کمشنر اٹک ہیں سمیت دیگر محکموں میں کرپشن عروج پر ہے سرکاری طور پر بنائے جانے والے لائسنس ، شعبہَ بلڈنگ اور دیگر شعبوں میں کرپشن کی کہانیاں زد و عام ہیں لائسنس بنانے کیلئے جاری کردہ رسیدوں کا کوئی ریکارڈ نہیں اہلکار سرکاری اوقات کار کے بعد بھی رات گئے تک غریب تاجروں سے لائسنس کی فیس نقد وصول کر کے جیب میں ڈال رہے ہیں جنہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ۔

Comments

comments