اہل سنت انبیاء وصحابہ کومانے والے ہیں انتہاء پسندی نہ ماننے والے پھیلارہے ہیں،مولاناعبدالغفور حیدری

  • IMG_20200918_212527.jpg

جمعیت علماء اسلام کے سینیٹرمولاناعبدالغفور حیدری نے کہاکہ اہل سنت انبیاء وصحابہ کومانے والے ہیں انتہاء پسندی نہ ماننے والے پھیلارہے ہیں،محرم میں صحابہ اکرام پر لعن طعن کی گئی جس کے ردعمل میں اہل سنت سڑکوں پر آئے اورمطالبہ کیاکہ گستاخوں کوسزا دی جائے ،ایمان سوز باتیں کی گئیں جن کو کوئی مسلمان برداشت نہیں کرسکتا ،انبیاء وصحابہ میں سے کسی ایک کی بھی شان میں گستاخی کفر سمجھتے ہیں۔ان خیالات کااظہارجمعیت علماء اسلام کے سینیٹرمولاناعبدالغفور حیدری سینیٹ میں سینیٹرشیری رحمان کے خطاب پر ردعمل دیتے ہوئے کیا۔جمعیت علماء اسلام کے سینیٹرغفور حیدری نے کہاکہ شیعہ سنی مسئلہ ٹھیک ہوگیا تھاہم نے متحدہ مجلس عمل بنائی اوراس میں تمام مسالک کو شامل کیا لیکن اس سال محرم میں ایک ذاکر نے گستاخی کی اور خلیفہ اول کو کافر قراردیا اس کی وجہ سے مسئلہ اٹھا ،راتوں رات اس کو لندن پہنچایا گیا کراچی میںسرعام صحابہ پر لعن طعن کی گئی اس پر اہلسنت کا ردعمل آیا ان کا مطالبہ تھا کہ ملک میں یہ کیا ہو رہا ہے اس کر گرفت میں نہیں لیا گیا اس کے ردعمل میں اہل سنت نے مظاہرے ہوئے ۔ہم مسلمان ہیں 1لاکھ 24ہزار انبیاء کو مانتے ہیں ایک کا بھی انکار نہیں کرتے ہیں ۔اہل سنت تمام انبیاء کو مانتے ہیں جوانبیاء و صحابہ کی توہین کرتے ہیں انتہا پسندی ان کی طرف سے ہے اہل سنت کی طرف سے نہیں ۔ہم اہل بیت صحابہ سب کو مانتے ہیں ایک کی بھی گستاخی کرنا کفر سمجھتے ہیں ۔ان کی طرف سے ایمان سوز باتیں آتی ہیں جن کو کوئی مسلمان برداشت نہیں کرسکتا ہے ۔اہل سنت مانے والے ہیں کسی کا انکارکرنے والے نہیں ہیںانبیاء وصحابہ میں سے کسی ایک کی بھی شان میں گستاخی کفر سمجھتے ہیں ۔صحابہ اللہ سے راضی اور وہ اللہ ان سے راضی ہے ۔اگر صحابہ کو نکال دیں تو دین میں کچھ نہیں بچتا ہے شیخ رشید نے کہاہے کہ فرقہ وارانہ فسادات بھارت کرنا چاہتا ہے ۔میں نے دوسرا رخ دیکھنالازمی سمجھا کیوں کہ ایک طرفہ رخ پیش کیاجارہاتھا۔

Comments

comments