وسکانسن میں پاکستانی کے ہاتھوں پاکستانی کاقتل

  • 87319FB1-7222-4E30-8742-9F1E915B78B1.jpeg

وسکانسن میں پاکستانی کے ہاتھوں پاکستانی کاقتل
رپورٹ آفاق فاروقی

وسکانسن مِلواکی میں پاکستانی نے پاکستانی کو قتل کردیا ، اکتیس اگست کی شام کو چھ بجے پنتیس سالہ نعیم سروش اپنے پڑوسی پینسٹھ سالہ افضل کے پاس انکے فرنٹ یارڈ کی گھاس بڑھنے کی شکایت لیکر گئے ، سی سی ٹی وی فوٹیج کے مطابق دونوان کے درمیان معمول کی گفتگو ہوتے ہوتے افضل نے پستول نکالی اور نعیم سروش کے سینے پر فائر کردیا ، نعیم سروش گولی کھا کر گھر کی جانب بھاگے تو افضل نے دوسرا فائر انکی پشت پر کیا ، جسکے بعد سروش گر کر فوری ہلاک ہوگئے ، افضل کا کہنا ہے نعیم سروش جو وسکانسن کمیونیٹی پولیس میں ملازمت کرتے تھے ، باتوں کے دوران مسلسل جیب میں ہاتھ ڈالے ہوئے تھے جس سے مجھے خدشہ ہوا کہ انہوں نے ہتھیارپکڑ رکھا ہے ،متوفی نعیم سروش پانچ سال پہلے افضل کے گھر کے ساتھ والے گھ میں آکر آباد ہوئے تھے اوردوکمسن بچیوں کے باپ تھے ، جبکہ افضل قریبا دودہائیوں سے اس علاقے میں آباد ہیں ، افضل کو فرسٹ ڈگری قتل کے الزام میں گفتار کرلیا گیاہے

نعیم سروش کی ایک دوست نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا ہے ، نعیم سروش پندرہ سال کی عمر میں اپنے والد کے ساتھ چیچہ وطنی پنجاب سے مِلواکی آئے تھے یہیں انکی شادی ہوئ ، انکی بارہ اور سات سالہ دو بیٹیاں ہیں والد حیات ہیں جبکہ قتل کے ملزم افضل خان کا تعلق گجرات سے ہے اور چند سال قبل تک چند گیس اسٹیشن کے مالک تھے جو حال میں فروخت کرکے ریٹائرمنٹ کی زندگی گزار رہے تھے افضل پوتے اور پوتیوں والے ہیں اور قتل سے چند گھنٹے قبل انکے ہوتے پوتیاں نعیم سروش کے گھر کھیل رہے تھے جبکہ افضل کی فیملی پاکستان جاتی تو نعیم سروش کے گھر سے انکے لئیے کھانا پک کر جاتا تھا ، دوست کا دعوی ہے نعیم سروش بتایا کرتے تھے مجھے محسوس ہوتا ہے افضل خان کسی بات پر مجھ سے درون خانہ چڑے ہوئے ہیں

Comments

comments