ملک کو آئندہ دوسالوں میں گیس کی شدید قلت کا سامنا ہوگا، عمر ایوب

  • IMG_20200909_015916.jpg

وزیرتوانائی عمرایوب نے کہا ہے ملک کوآئندہ دوسالوں میں گیس کی شدید قلت کا سامنا ہو گا۔صوبوں کا گیس ملکیت کا اختیاربھی فائدہ مند ثابت نہیں ہوگا۔اسلام آباد میں میڈیا کوبریفنگ دیتے ہوئے وزیرتوانائی عمرایوب کا کہنا تھا کہ ملک میں گیس کی بڑھتی ہوئی قلت پرقابوپانے کیلئے وزیراعظم کی زیرصدارت قومی سیمنارکا انعقاد آج بدھ کو کیا جارہا ہے جس میں گیس کی قلت کے مقابلے کیلئے قومی لائحہ اختیارکرنے پرغورہو گا۔انہوں نے واضع کیا کہ حکومت قدرتی وسائل کی ملکیت اوراستعمال میں صوبوں کو فوقیت دینے والی آئین کی شق 158میں ترمیم نہیں کریگی،تاہم گیس کے بہتراستعمال کیلئے قومی لائحہ عمل بنانیکیلئیکوشش کرے گی۔اس موقع پرمعاون خصوصی ندیم بابرکا کہنا تھا کہ سندھ اپنی گیس سے ڈیڑھ سال،خیبرپختونخواہ ڈھائی سال جبکہ بلوچستان مزید ساڑھے تین سال ضروریات پوری کرسکیں گیجس کے بعد وہاں پربھی پنجاب کی طرح گیس کی قلت ہوگی۔انہوں نیکہا کہ قلیل مدت میں گیس کی ضروریات ایل این جی کی درآمد سے پوری کی جائیں گی جبکہ طویل مدت میں مقامی طورپرتیل وگیس کی تلاش کا کام تیز کرنا ہوگا۔ندیم بابر کا مزید کہنا تھا کہ ایل این جی کی ترسیل کیلئے شمال جنوب گیس پاہپ لائن روسی کمپنی بچھائیگی جس کیلئے روسی حکومت کوخط لکھ دیا گیا ہے۔جی آئی ڈی سی کی رقم ملنیسے ملک میں گیس کی ترسیل کینیٹ ورک کوجدید بنایا جائیگا۔کل ہونیوالی کانفرنس میں ماہرین کے علاوہ نجی شعبے کے حکام بھی شرکت کریں گے۔

Comments

comments