‎گورنرسندھ عمران اسماعیل کا عیسیٰ نگری کے قریب رہائش پذیر بچی کو شرپسندعناصر کی جانب سے تنگ کئے جانے کا نوٹس

کراچی: علاقہ پولیس اور رینجرز نے عیسیٰ نگری کے قریب میکاسا اپارٹمنٹ کا محاصرہ کرلیا، اپارٹمنٹ کی رہائشی فیملی کو تنگ کرنے والے شرپسند عناصر گرفتار کرلیئے گئے۔۔ قانون نافذ کرنے والے ادارے لڑکی ماہا ملک کے گھر پہنچ گئے۔ لڑکی کا کہنا تھا کہ اوباش نوجوان دوستی نہ کرنے پر سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔
گورنرسندھ عمران اسماعیل نے عیسیٰ نگری کے قریب میکاسا اپارٹمنٹ میں رہائش پذیر بچی کو شرپسندعناصر کی جانب سے تنگ کئے جانے کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سندھ پولیس کو اس معاملہ کی تحقیقات کرکے تدارک کی ہدایت کر دی ہے ۔ انہوں نے آئی جی سندھ پولیس کو ہدایت کی کہ علاقہ پولیس کو سختی سے ہدایت کی جائے کہ اس قسم کے واقعات کو ہونے سے روکے۔ گورنرسندھ کا کہنا تھا کہ شہریوں کو تحفظ فراہم کرنا پولیس کے ذمہ داری ہے اس ضمن میں کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ واضح رہے کہ میٹرک کی طالبہ ماہا ملک جانب سے سوشل میڈیا پر مدد کی اپیل کی تھی جس پر گورنرسندھ کی علاقہ کے ایم این اے اور ایم پی اے کو فوری طور پر بچی سے رابطہ کرنے کی ہدایت کی تھی ۔ دریں اثنا گورنر سندھ کے نوٹس لینے اور آئی جی سندھ کو معاملہ کی تحقیقات کر کے اس کے تدارک کی ہدایت کے بعد علاقہ ایس ایچ او پی آئی بی کالونی نے فوری کارروائی کرتے ہوئیطالبہ ماہا عامر بنت سید عامر اعظم کو ہراساں کرنے والے دو ملزمان انور زادہ عرف کرنل اور یونس بونیری کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ کراچی پولیس کا دعوی ہت کہ *پریس ریلیز*

ایڈیشنل آئی جی کراچی کا عیسیٰ نگری کے قریب میکاسا اپارٹمنٹ میں رہائش پذیر طالبہ کو شرپسند عناصر کی جانب سے تنگ کئے جانے کا نوٹس۔

میٹرک کی طالبہ ماہا ملک کی جانب سے سوشل میڈیا پر مدد کی اپیل کی گئی تھی۔

ایڈیشنل آئی جی کراچی پولیس کی ہدایت پر واقعے میں ملوث دو ملزمان انور دادا عرف کرنل اور یونس کو گرفتار کر کے مقدمہ درج کیا جا رہا ہے۔

کراچی پولیس کو اس قسم کے واقعات کی روک تھام کیلئے موثر حکمت عملی ترتیب دینے کی ہدایت بھی دی گئی ہے۔

کراچی کے شہریوں کی جان اور مال کو تحفظ فراہم کرنا پولیس کی اولین ذمہ داری ہے۔

*ترجمان کراچی پولیس*

Comments

comments