رانا ثنا ء اللہ کی عدالت میں حاضری سے معافی کی درخواست منظور

لاہور لاہورکی انسدادِ منشیات کی خصوصی عدالت نے مسلم لیگ نون کے رہنما رانا ثنا اللہ کے خلاف منشیات کیس کی سماعت کے دوران رانا ثنا اللہ کی عدالت میں حاضری سے معافی کی درخواست منظور کر لی۔ ہفتہ کو انسدادِ منشیات کی خصوصی عدالت کے جج شاکر حسن نے کیس کی سماعت کی ۔عدالت نے رانا ثنا اللہ کی درخواست پر وکلا کو بحث کے لیے طلب کر رکھا تھا۔رانا ثنا اللہ کے وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ گرفتار کرنے کے بعد میرے موکل کے خلاف اے این ایف نے بیانات قلمبند کیے ہیں۔اے این ایف نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ رانا ثنا اللہ عدالتی وقت ضائع کر رہے ہیں، ان کے خلاف کوئی بیان قلمبند نہیں کیا گیا۔اے این ایف نے استدعا کی کہ عدالت درخواست مسترد کرتے ہوئے رانا ثنا اللہ پر فردِ جرم عائد کرنے کا حکم دے۔انسدادِ منشیات کی خصوصی عدالت میں سابق وزیر قانون رانا ثنا اللہ کی جانب سے اپنے وکیل کی وساطت سے حاضری معافی کی درخواست جمع کروا دی گئی۔درخواست میں رانا ثنا اللہ کے وکیل نے موقف اختیار کیاکہ رانا ثنا اللہ کورونا وائرس کے خدشے کے باعث پیش نہیں ہو سکتے۔انہوں نے استدعا کی کہ سیکیورٹی کے بغیر سفر کرنا خطرناک ہے، عدالت رانا ثنا اللہ کی حاضری معافی کی درخواست منظور کرنے کا حکم دے۔عدالت نے رانا ثنا اللہ کی حاضری معافی کی درخواست منظور کر لی ، جبکہ رانا ثنا اللہ کی درخواست پر فریقین کے وکلا کو حتمی بحث کے لیے اگلی سماعت پر طلب کرلیا ۔انسدادِ منشیات کی خصوصی عدالت نے رانا ثنااللہ کے خلاف کیس کی سماعت 6 جون تک ملتوی کر دی ۔واضح رہے کہ رانا ثنا اللہ پر 15 کلو منشیات برآمد ہونے کا الزام ہے، لاہور ہائی کورٹ نے ان کی درخواستِ ضمانت منظور کر رکھی ہے۔

Comments

comments