روہڑی میں مسافر بس پاکستان ایکسپریس کی زد میں آگئی، 19 مسافر جاں بحق

  • 0_1_105805_album.jpg

سکھر: روہڑی کے قریب کندھرا پھاٹک پر پاکستان ایکسپریس کی زد میں مسافر بس آگئی جس کے نتیجے میں 19 افراد جاں بحق اور 18 زخمی ہوگئے۔

پولیس کے مطابق روہڑی کے قریب کندھرا پھاٹک پر مسافر بس کراچی سے راولپنڈی جانے والی پاکستان ایکسپریس کی زد میں آگئی اور حادثہ پھاٹک نہ ہونے کے باعث پیش آیا۔

کوچ ڈرائیور نے ٹریفک جام کے باعث گاڑی کو ریل ٹریک سے گزارنا چاہ رہا تھا کہ گاڑی ٹرین کی زد میں آ گئی۔

پولیس نے بتایا کہ مسافر بس اور ٹرین کے درمیان تصادم کے نتیجے میں 19 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے۔ 

کمشنر سکھر شفیق مہیسر نے حادثے میں 19افراد کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایاکہ جاں بحق ہونے والوں میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیںکراچی آنے والی ٹرین جناح ایکسپریس حادثے کا شکارتیزگام ایکسپریس میں آتشزدگی، ہلاکتوں کی تعداد 74 ہوگئیشیخ رشید نے تیز گام ٹرین حادثے کی ذمہ داری مسافروں پر ڈال دی

انہوں نے بتایا کہ زخمیوں کو تعلقہ اسپتال روہڑی اور سول اسپتال سکھر منتقل کیا گیا ہے جبکہ ایک کلو میٹر تک کے علاقے کی سرچنگ کی جارہی ہے۔

پولیس کے مطابق مسافر کوچ کراچی سے سرگودھا جارہی تھی اور خوفناک حادثے میں بس کے 2 ٹکڑے ہوگئے۔

عینی شاہدین کے مطابق مسافر کوچ جب روہڑی پہنچی تو روہڑی پل پر ٹریفک جام تھا  جس پر ڈرائیور نے کوچ کو نیچے والے روڈ سے نکالنا چاہا لیکن سڑک کے بیچ میں ریلوے ٹریک تھا جہاں نہ پھاٹک اور نہ ہی روشنی تھی، ٹریک کے دونوں طرف کھجور کے درخت تھے بس ریلوے کا ایک بورڈ تھا جس پر لکھا تھا کہ پھاٹک اپنی ذمہ داری سے عبور کریں۔

 ڈرائیور کوچ کو لے کر ریلوے ٹریک پر جیسے ہی پہنچا کوچ ٹریک پر آتی تیز رفتار پاکستان ایکسپریس کی زد میں آگئی اور  زور دار دھماکے کے بعد مسافر کوچ کے تین ٹکڑے ہوگئے، بیچ کا حصہ تو ٹرین ایک کلو میٹر تک کھینچ کر اپنے ساتھ لے گئی۔

ٹرین کے مسافروں کا کہنا ہے کہ جھٹکے کے بعد جب ٹرین رکی تو دیکھا ہر طرف لاشیں بکھری پڑی تھیں۔

حادثے کے بعد مقامی افراد، پولیس ، رینجرز اور ریسکیو عملہ فوری طور پر پہنچ گیا جس نے لاشوں اور زخمیوں نکال کر تعلقہ اسپتال روہڑی اور سول اسپتال سکھر پہنچایا۔

کوچ میں سوار خواتین اور بچوں سمیت 19 مسافر جاں بحق اور 18 زخمی ہوگئے ۔ حادثے کے بعد ریلوے ٹریک کلیئر کرکے پاکستان ایکسپریس کو روانہ کردیا گیا ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کی مذمت

 حادثے میں جانی نقصان پر پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے شدید افسوس کا اظہار کیا ہے۔

بلاول کا کہنا ہے کہ آئے روز کے ٹرین حادثات وفاقی حکومت کی کارکردگی پر ایک سوالیہ نشان بن چکے ہیں، ایک ٹرین حادثے پر استعفیٰ کی باتیں کرنے والے عمران خان آخر کتنے حادثوں بعد جاگیں گے؟

انہوں نے کہا کہ سیاست دانوں کی کردارکشی میں مصروف پی ٹی آئی حکام کو عوام کی زندگیوں کی کوئی فکر نہیں۔

حادثہ بظاہربس ڈرائیورکی لاپرواہی سے پیش آیا،ترجمان ریلوے

ترجمان ریلوے نے روہڑی حادثے پر وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کی جانب سے اظہار افسوس کیا ہے۔

ترجمان ریلوے کا کہنا ہے کہ حادثہ اَن مینڈ لیول کراسنگ پر پیش آیا،حادثہ بظاہربس ڈرائیورکی لاپرواہی سے پیش آیا، حادثے میں ٹرین انجن کو نقصان پہنچا اور اسسٹنٹ ڈرائیور زخمی ہوا جبکہ  ٹرین مسافر محفوظ ہیں۔

ترجمان نے کہا کہ 2470 اَن مینڈ لیول کراسنگ ہیں جنہیں مینڈ کرنے کیلئے ریلوے نے کئی بار صوبائی حکومتوں کو خط لکھے، ڈرائیوروں اور راہگیروں سے ٹریک احتیاط سے عبور کرنے کی درخواست ہے، روہڑی حادثے کی انکوائری ایف جی آئی آر کریں گے۔

علاوہ ازیں کراچی سےلاہور جانےوالی قراقرم ایکسپریس خیرپور میں روک دی گئی ہے، ملت ایکسپریس کو سیٹھارجہ ،کراچی ایکسپریس کو بھریاروڈ میں روک دیاگیا ہے۔

ادھر رینجرز کی امدادی ٹیم بھی حادثے کی جگہ پر پہنچ گئی ہے اور امدادی کاموں میں رینجرز کے جوان حصہ لے رہے ہیں۔

Comments

comments