پسند کی شادی کرنے والے کع اپنے ھی برادری کے لوگوں نے بیوی اور بیٹی کے سامنے بیدردی سے قتل کردیا قاتل فرار

No video URL found.

کراچی :
( رپورٹ : باغی ساگر پنھوار )
گشتہ رات دیر سے قاضی احمد کے قریب گاوں شیر علی کھوسو میں پسند کی شادی کرنے والا صدیق کھوسو پے اپنے ھی برادری کے لوگوں نے اپنی بیوی اور محصوم بیٹی کے سامنے بیدردی سے قتل قاتل فرار

پولیس معمول کے مطابق قانونی کاروائی کرکے پرسکون علائقے میں خوف و حراس ایک ھی برادری کے لوگ آپس میں مورچا بند ھو گئے ھتیاروں کے پھرے میں قتل ھونے والا صدیق کھوسو سپرد خاک گھروالوں کا جوابداروں کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا جوابدار فرار تفصیل کے مطابق : قاضی احمد کے قریب گاوں شیر علی کھوسو میں کچھ عرصہ قبل پسند کی شادی کرنے والا جوڑا صدیق کھوسو اور مسمات حوا کھوسو نے اپنی مرضی کے مطابق شادی کرنے کے بعد لڑکی حوا کے وارثوں نے گذشتہ رات دیر سے ناز محل ھوٹل کے سامنے اپنی بیوی حوا اور ایک سال کی محصوم بیٹی کے سامنے سرعام کھوسو برادری کے چار ھتیاربندوں نے پسٹیل کے فائر کر کے قتل کرنے کے بعد فرار ھو گئے نعش کو قاضی احمد پولیس نے اپنی تحویل میں لیے کر اسپتال میں پوسٹ مارٹم کے بعد وارثوں کے حوالے کر دیا اس موقعے پے قتل ھونے والا صدیق کھوسو کی بیوی نے کہا کہ ھماری اپنی ھی برادری کے چار ھتیاربند جس میں دیدار کھوسو محمد کھوسو ۔ قادربخش کھوسع ۔ اور نواز کھوسو نے میرے اور میری بیٹے کے سامنے میرے شوہر کو قتل کرنے کے بعد باآسانی سے فرار ھو گئے مزید مسمات حوا نے بتایا کہ مجھے اور میرے شوہر کو مسلسل قتل کرنے کی دھمکیاں ملتی ھی اور آج انہیں قتل کر دیا جبکہ دوسری جانب ایس ایچ او قاضی احمد حسین علی کرل سے رابطہ کرنے پے بتایا کہ کچھ عرصہ واقعے مسمات حوا نے صدیق کھوسو سے پسند کی شادی کی تھی اور یے دونوں گاوں چھوڑ کر کراچی میں بسر تھے جبکہ مسمات حوا کے والد قادر بخش کھوسو نے مقتول کے خلاف کورٹ میں پیٹیشن بھی دائر کی ھوئی تھی جس کا مقدمہ کورٹ میں بھی چل رھا تھا لیکن صدیق کو جوابداروں نے قتل کرکے قانون کو ھاتھ میں لیے لیا ھے جس کی گرفتاری کا عمل جاری ھے مقتول کو ھتیاروں کے پھرے میں سپرد خاک کیا گیا جبکہ علائقہ میں مزید خون ریزی کا خدشہ ھے اور دونوں طرف سے لوگ ھتیاروں سے لیس ھیں

Comments

comments