شادی شدہ طالبہ ساتھ جنسی زیادتی کی ویڈیو بنانے والے میاں بیوی گرفتار

  • IMG_20190816_192712.jpg

‏راولپنڈی پولیس نے ایم ایس سی کی طالبہ شادی شدہ لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد اس کی برہنہ ویڈیو بنانے والے ملزمان میاں بیوی کو گرفتار کر لیا۔ وقوعہ کا مقدمہ تھانہ سٹی میں اغواء اور زیادتی کی دفعہ کے تحت درج تھا۔ پولیس

راولپنڈی پولیس کی بڑی کامیابی، کم عمر بچیوں کو زیادتی کا نشانہ بنا کر ان کی برہنہ ویڈیو اور تصاویر بنانے والے سفاک ملزم اور اس کی ملزمہ بیوی کو گرفتار کر لیا،ملزمان کا45کم عمر بچیوں کو زیادتی کا نشانہ بنا نے کا اعتراف،10بچیوں کی برہنہ ویڈیو فلمیں اور ہزاروں تصاویر بر آمد،ملزمان نے ایم ایس ای کی ایک شادی شدہ لڑکی کو زبردستی کار میں بٹھا یا،ملزم شوہر لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بناتا رہا جبکہ ملزمہ بیوی اس کی ویڈیو بناتی رہی،ملزم جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے پاس زیر تفتیش جبکہ ملزمہ کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوادیا گیا،خواتین کی حقوق کے لئے کام کرنے والی تنظیموں کی ٹیلی فون کر کے سی پی او کو شاباش،تفصیلات کے مطابق چند روز قبل ایم ایس سی کی شادی شدہ طالبہ ”س ج“یونیورسٹی ورکشاپ اٹینڈ کرنے کے بعد گارڈن کالج نزد لیاقت باغ کے گیٹ سے باہر آئی کہ ایک نقاب پوش لڑکی نے خود کو طالبہ ظاہر کیا اور ٹیپو روڈ کی جانب جانا ظاہر کیا،اسی دوران ایک گاڑی آئی جسے ایک لڑکا چلا رہا تھا،ایم ایس سی کی طالبہ کو اس میں زبردستی بٹھا لیا گیا،کار کے شیشوں پر کالے پردے گرا دئیے ملزمان گلستان کالونی کی ایک کوٹھی میں لے گئے جہاں ملزم قاسم جہانگیر نے زیادتی کا نشانہ بنایا جبکہ ملزم کی اہلیہ برہنہ ویڈیو بناتی رہی،وقوعہ کی اطلاع ملنے پر سٹی پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانا نے وقوعہ کا سخت نوٹس لیتے ہوئے متاثرہ لڑکی کی مدعیت میں تھانہ سٹی میں نا معلوم مردو عورت کے خلاف مقدمہ درج کروایا،سی پی او کے مسلسل فالو اپ اقدامات کی وجہ سے پولیس نے متاثرہ لڑکی کی نشاندہی پر ملزم قاسم اور اس کی ملزمہ بیوی کرن محمود کو گرفتار کیا،گزشتہ روز سی پی او فیصل رانا نے ایس پی راول اکرم نیازی اور اس مقدمہ کے تفتیشی آفیسر عقیل راٹھور SIکو دفتر طلب کر کے مقدمہ کی پراگرس لی تو اس میں ہوشربا انکشافات سامنے آئے،سی پی او کا بتایا گیا کہ ملزمان نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ وہ کم عمر بچیوں کو اغواء کرتے تھے،ملزم قاسم بچیوں کو زیادتی کا نشانہ بناتا جبکہ اس کی اہلیہ ملزمہ کرن اس بھیانک فعل کی موبائل فون کی ذریعے ویڈیو فلم اور تصاویر بناتی،سی پی او کو بتایا گیا کہ ملزمان نے 45بچیوں کو زیادتی کا نشانہ بنانے کا اعتراف کیا ہے،پولیس نے ملزمان سے10بچیوں کی برہنہ ویڈیوفلم جبکہ ہزاروں تصاویر اور وہ موبائل فون بر آمد کر لیا ہے جس کے ذریعے ہوس پرستی کا یہ بھیانک کھیل کھیلا جاتا تھا،پولیس نے ملزمان سے وارداتوں میں استعمال ہونے والی کرولا کار نمبری VW-789 بھی بر آمد کر لی،سی پی او کو بتایا گیا کہ ملزمہ کرن کو عدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا ہے جبکہ ملزم قاسم پولیس کے پاس جسمانی ریمانڈ پر ہے جس سے تفتیش جاری ہے،سی پی او کو بتایا گیا کہ ایم ایس سی کی طالبہ سے زیادتی کے مقدمہ میں استعمال ہونے بیڈ شیٹ اور ٹشو پیپرز وغیرہ قبضہ میں لے کر ڈی این اے ٹیسٹ کے لئے فرانزک سائنس لیبارٹری بھجوا دئیے گئے ہیں ملزم قاسم جہانگیر کم عمر لڑکیوں کو پھنساکر زیادتی کا نشانہ بناتا تھا جبکہ اس کی ملزمہ بیوی ویڈیو فلم اور تصاویر بناتی تھی جس کے ذریعے متاثرہ لڑکیوں کو بلیک میل کیا جاتا تھا،ایم ایس سی کی طالبہ کو بھی برہنہ ویڈیو کے زریعے بلیک میل کیا گیا اور سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دیں گئیں،سی پی او نے اخلاقی سفاکیت کے مرتکب ملزم اور ملزمہ کی گرفتاری پر پولیس کو شاباش دیتے ہوئے کہا کہ ایس پی راول ان تمام خاندانوں سے رابطہ کریں گے جن کی بچیاں ملزمان کی سفاکیت کا نشانہ بنی ہیں،ملزمان کے خلاف ہر وقوعہ کی الگ الگ ایف آئی آر درج کی جائے،ملزمان کو ہر ایف آئی آر میں الگ الگ چالان کیا جائے،تفتیش اس قدر سنجیدہ انداز میں کی جائے کہ ملزمان کو قانون کے مطابق ایسی سزادلوائی جائے جو معاشرے میں عبرتناک ہو مستقبل میں کسی کوقوم کی بیٹیوں کے ساتھ اس طرح کا گھناؤنا کھیل کھیلنے کا سوچنے کی ہمت بھی نہ ہو،دریں اثناء خواتین کے حقوق کے لئے کام کرنے والی سماجی و غیر سرکاری تنظیموں نے ٹیلی فون پر سی پی او سے رابطہ کیا،انہیں بدترین اخلاقی گراوٹ کا شکار میاں بیوی ملزمان کی گرفتاری پر شاباش دیتے ہوئے اسے پنڈی پولیس کی بڑی کامیابی قرار دیا،سی پی او نے یقین دلایا کہ قوم کی بچیوں کی عزتوں سے کھیلنے والے اس سفاک ملزمان کے ساتھ کسی قسم کی رورعائت نہیں کی جائے گی،میں ان کیسز کے تفتیشی عمل کی خود مانیٹرنگ کروں گا جبکہ ایس ایس پی انوسٹی گیشن ان مقدمات کی تفتیش کی خود نگرانی کریں گے،سی پی او نے پولیس افسران کو ہدائت کی کہ اس بھیانک کھیل میں اگر ملزمان کے ساتھ کوئی سہولت کار بھی ہیں تو انہیں بھی گرفتار کر کے قانون کے کٹہرے میں لایا جائے،سی پی او نے کہا کہ ان مقدمات کے حوالے سے انہیں روزانہ کی بنیاد پر آگاہ رکھا جائے۔
راولپنڈی:سی پی او نے محرم الحرام میں سیکورٹی انتظامات کی وجہ سے پولیس افسران اور اہلکاروں کی چھٹیاں منسوخ کر دیں،سیکورٹی انتظامات کی مانیٹرنگ کے لئے سی پی او آفس میں 24/7کام کرنے والا کنٹرول روم قائم،شر انگیزی کا ریکارڈ رکھنے والے خطباء کی زبان بندی اور ضلع بندی کروانے کے لئے فوری اقدامات کی ہدایت،نیشنل ایکشن پلان کی ایک ایک شق پر عمل کیا جائے گا خلاف ورزی پر فوری گرفتاریاں ہوں گے اور انسداددہشت گردی ایکٹ کے تحت مقدمات درج ہوں گے،سی پی او کا محرم الحرام کی سیکورٹی سے متعلق بلائے گئے اجلاس سے خطاب،تفصیلات کے مطابق سٹی پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانا نے محرم الحرام کی سیکورٹی سے متعلق ایک اجلاس کی صدارت کی جس میں ایس ایس پی آپریشن سید علی اکبر،ایس ایس پی انوسٹی گیشن محمد فیصل،ایس پی صدر رائے مظہر اقبال،ایس پی پوٹھوہار سید علی اور ایس پی راول اکرم خان نیازی اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی،اجلاس میں سی پی او کو بتایا گیا کہ گزشتہ سال ضلع راولپنڈی میں محرم الحرام کے پہلے عشرے میں مجموعی طور پر1766مجالس منعقد کی گئیں،316جلوس نکالے گئے جن میں 270جلوس راوئتی اور46لائسنسنی تھے،سی پی ا وکو محرم کے سیکورٹی پلان کے متعلق بھی بریفنگ دی گئی،اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سی پی او فیصل رانا نے کہا کہ سیکورٹی خدشات کے باوجود جس طرح راولپنڈی پولیس نے عید الضحیٰ اور جشن آزادی پر فول پروف اور قابل رشک سیکورٹی دی اسی طرح محرم الحرام میں بھی ہم نے فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو فروغ دیتے ہوئے فول پروف سیکورٹی دینا ہے،انہوں نے کہا کہ محرم میں ”کسی کے عقیدے کو چھیڑو نہیں اور اپنے عقیدے کو چھوڑو نہیں“ کے فارمولے پر ہر کسی کو عمل در آمد کرنا ہو گا جس طرح کے حالات میں محرم آ رہا ہے ہم کسی بھی صورت اس بات کے متحمل نہیں کہ فرقہ واریت کی چنگاری سلگے،ہم نے اس نوعیت کی چنگاری کو سرے سے سلگنے ہی نہیں دینا،جو کوئی ایسی چنگاری سلگانے کی کوشش کرے گا اسی فوری طور پر گرفتار کر کے جیل بھجوا دیا جائے گا اور اس کے خلاف نیشنل ایکشن پلان کی انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج ہو گا،سی پی او نے کہا کہ پولیس مختلف مسالک کے مابین فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے فروغ کے لئیپل کا کردار ادا کرے ایسے پروگرام زیادہ سے زیادہ منعقد کئے جائیں جو فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے فروغ اور استحکام کا باعث بنیں،سی پی او نے کہا کہ جو خطباء شر انگیزی اور نفرتیں پھیلانے کا ریکارڈ رکھتے ہیں ان کی ضلع راولپنڈی میں زبان بندی اور ضلع میں داخلہ پر پابندی کے حوالے سے فوری طور پر اقدامات اٹھائے جائیں،انہوں نے کہا کہ راوئتی اور لائسنسنی جلوسوں کو مکمل سیکورٹی دی جائے گی،ان جلوسوں کو مقررہ وقت پر اپنا روٹ ہر صورت مکمل کرنا ہو گا کوئی جلوس روٹ سے یا وقت سے ہٹ کر نہیں چل سکے گا،سی پی او نے کہا کہ محرم الحرام میں پولیس افسران اور اہلکاروں کی چھٹیاں منسوخ کر دی گئی ہیں،میرے دفتر میں ایک کنٹرول روم قائم کر دیا گیا ہے جہاں پر24/7سیکورٹی انتظامات کی مانیٹرنگ کی جائے گی،محرم الحرام میں حساس مقامات پر پولیس کے فلیگ مارچ بھی ہوں گے،ہر ڈویژن کا ایس پی سیکورٹی کے معاملات کا ذمہ دار اور جواب دہ ہو گا،سی پی او نے کہا کہ محرم کی سیکورٹی اور معاشرتی امن کے قیام و استحکام کے حوالے میں عاشورہ محرم تک روزانہ اس نوعیت کا ایک اجلاس منعقد کروں گا۔

راولپنڈی پولیس نے منشیات فروشوں،ناجائز اسلحہ،ون ویلنگ کرنے والوں کیخلاف کاروائی کرتے ہوئے 15ملزمان کو گرفتار کرکے ان کے قبضہ سے 1750گرام چرس،18لیٹر شراب،1پستول30بورمعہ25روند برآمد کر کے ملزمان کے خلاف الگ الگ مقدمات درج کرلیے۔
تفصیلات کے مطابق تھانہ نصیرآباد پولیس نے رحمت سے 1250گرام چرس،تھانہ سول لائن پولیس نے صفدر سے 250گرام چرس،تھانہ روات پولیس نے وقاص سے 250گرام چرس،وقار سے08لیٹر شراب،تھانہ وارث خان پولیس نے ارسلان سے5لیٹر شراب،سہیل سے5لیٹر شراب،تھانہ صادق آباد پولیس نے عامر سے1پستول30بور معہ25روند،تھانہ کینٹ پولیس نے فاران اختر سے3سوتر گولے،ون ویلنگ کی خلاف ورزی کرنے پر تھانہ مورگاہ پولیس نے فیصل،تھانہ وارث خان پولیس نے طلحہ،تھانہ بنی پولیس نے احسن،ابرارجبکہ تھانہ نیوٹاؤن پولیس نے راشد،سعد اور فاروق کو گرفتار کرکے ملزمان کے خلاف الگ الگ مقدمات درج کرلیے۔

راولپنڈی پولیس نے قمار بازوں کے خلاف کاروائی کرتے ہوئے 11ملزمان کو گرفتار کر کے ان کے قبضہ سے داؤ پر لگی رقم مبلغ24000/روپے اور 10موبائل فون برآمد کر کے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔تفصیلات کے مطابق تھانہ نیوٹاؤن پولیس نے بذریعہ تاش جوا ء کھیلتے ہوئے واصف،عاقب،خرم،عمران،ریاض،زوالفقار،عدنان،علی اکبر،شاہد،اقبال،عبدالغفورکو گرفتار کر لیا اور ان کے قبضہ سے داؤ پر لگی رقم مبلغ 24000/روپے اور 10موبائل فون برآمد کر کے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

Comments

comments