مسلم امہ کے سارے معاملات بھارت سے جڑے ہیں انھوں نے بھارت میں وسیع سرمایہ کاری کر رکھی ہے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی.

  • IMG-20190813-WA0015.jpg

مظفرآباد وزیر خارجہ پاکستان مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہیکہ اپوزیشن کشمیر کی نازک صورتحال پر سیاست نہ کرے پاکستان کے سیاسی معاملات کو کشمیر سے نتھی مت کیا جائے. کشمیر پر عالمی سطح پر پیغام پہنچانے میں کامیاب ریے مگر اصل کردار کشمیریوں نے ہی ادا کرنا ہے وہ خود کو متحرک کریں. امہ کی بڑی باتیں کی جاتی ہیں مگر حقیقت یہ ہے کہ مسلم امہ کے سارے معاملات بھارت سے جڑے ہیں انھوں نے بھارت میں وسیع سرمایہ کاری کر رکھی ہے. چین کو سلامتی کونسل کیلئے وکیل کرلیا سلامتی کونسل میں ہمارے لئے کسی نے پھولوں کے ہار نہیں رکھے کسی ایک مستقل ممبر کی مخالفت بڑا نقصان دے سکتی ہے. عید الاضحی کے روز مظفرآباد دورہ کے دوران وزیر خارجہ نے مرکزی عید گاہ میں وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر . چئیرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری .مسلم لیگ نون کے مرکزی راہنماوں اقبال ظفر جھگڑا. مرتضی جاوید عباسی ودیگر قایدین کے ہمراہ نماز ادا کرنے کے بعد یکجہتی کشمیر ریلی کی قیادت کی مہاجرین جموں و کشمیر کے کیمپوں کا دورہ کیا بعد ازاں صدر آزادکشمیر سردار مسعود خان اور وزیر اعظم آزادکشمیر کے ہمراہ دو الگ اکگ پریس کانفرنسز بھی کیں . ایوان وزیر اعظم میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے نمایندہ وفد سے ملْاقات کے بعد وزیر اعظم آزادکشمیر راجا فاروق حیدر خان اور صدر پی ٹی آئی و سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود چودھری کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ میں اس وقت پی ٹی آئی کی نمائندگی اور بطور وزیر خارجہ پاکستانیوں کی نمائندگی کرتے ہوئے لائن آف کنٹرول کے پار تک یکجہتی کا پیغام دینے آیا ہوں.پوری پارلیمنٹ نے بھارت کے مقبوضہ جموں و کشمیر میں غیر آئینی اقدامات کے خلاف متفقہ طور پر ایک قرارداد منظور کی. نیشنل سکیورٹی کمیٹی کے اجلاس میں ہم نے اس حوالے سے اہم فیصلے کیے . میں چین گیا کیونکہ سلامتی کونسل میں چین کو مقبوضہ کشمیر کے مقدمے کا وکیل کیا جائے اور وہاں سے ہمیں کامیابی حاصل ہوئی ہے .وزیر اعظم عمران خان نے ملائشیا ،ترکی ،برطانیہ ، انڈونیشیا ایران. اور باقی ممالک کے سربراہان سے گفتگو کی ہے جب کہ میری بھی مختلف ممالک کے وزرائے خارجہ سے رابطے ہو رہے ہیں آج بھی میری پولینڈ کے وزیر خارجہ سے بات ہو گی لیکن میں واضح کرنا چاہتا ہوں کہ ہماری کاوشیں اس وقت تک کامیاب نہیں ہونگی جب تک دنیا بھر میں موجود پاکستانی کشمیری اس جدوجہد کے ہراول دستے میں شامل نہیں ہوتے پاکستان اپنی بھرپور کوشش اور جدوجہد جاری رکھے گا
آج اگر مقبوضہ جموں و کشمیر میں کرفیو اٹھایا جاتا ہے اور لوگ باہر نکلتے ہیں تو ہمیں خدشہ ہے کہ وہاں موجود بھارتی فورسز ان کو کچلنے کی کوشش کریگی وزیر اعظم عمران خان چودہ اگست کو مظفرآباد آکر ریاستی پارلیمان سے خطاب کریں گےہم نے اپنے تاریخی موقف کو نہ چھوڑا ہے اور نہ چھوڑیں گے
شملہ معاہدہ میں معاملات کو دوطرفہ روابط سے حل کرنے کا ذکر تھا لیکن اس پر حملہ بھارت نے خود کیا ہے اس لئے ہم نے بھارت کے ساتھ اپنے معاہدات پر نظر ثانی کرنے کا فیصلہ کیا ہے. نیشنل سکیورٹی کونسل میں وزیر اعظم عمران خان نے میری سربراہی میں ایک اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دی ہے جس میں ہم ان معاہدوں کا جائزہ لیں گے
ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایلس ویلز جب پاکستان آئیں تو انہوں نے کہا کہ بھارت نے حالیہ فیصلوں میں ہم سے مشاورت کی اور نہ ہمارے علم میں تھا کہ وہ کشمیر پر کیا کرنے جارہا یے.
پاکستان نے فیصلہ کیا ہے کہ ہم سیاسی ، آئینی اور قانونی طور پر اس جدوجہد کو آگے بڑھائیں گے
دو ایٹمی طاقتوں کے مابین جنگ دونوں کیلئے خودکشی ثابت ہو گی لیکن ہم اپنے دفاع کا پورا حق رکھتے ہیں جب 26 کو بھارت کی جانب سے جارحیت ہوئی تو 27 کو ہمارا جواب سب کے سامنے تھا اب بھی اگر بھارت نے کوئی مہم جوئی کی تو بھرپور اور منہ توڑجواب ملے گا
بلاول بھٹو کی جانب سے ملک میں عدم استحکام اور کشمیر پر یکجہتی کی راہ میں حکومت کو رکاوٹ کہنے بارے سوال پر شاہ محمود نے کہا کہ میری گذارش ہے کہ کشمیر کے مسئلے کو سیاست سے بالاتر رکھا جائے اور پاکستان کے سیاسی معاملات کو کشمیر میں نہ گھسیڑا جائے. وزیر خارجہ نے کہا کہ ہم سے قونصلر رسائی کی بات کی جاتی ہے کہ کلبھوشن یادیو کی اہل خانہ سے ملاقات کروائی جائے لیکن یسین ملک صاحب کی اہلیہ مشعال ملک کو کیوں نہیں ملنے دیا جا رہا جن کی جیل میں حالت نہایت تشویش ناک ہے.ملک میں مکمل یکجہتی ہے آج بلاول یہاں تشریف لائے ہم نے اکٹھے نماز عید ادا کی ایک اچھا پیغام دنیا بھر میں گیا لیکن میں ان سے بھی یہی کہوں گا کہ سیاست کریں لیکن کشمیر کے پرچم میں مغلوف کر کے نہ کی جائے پارٹی فرد کی نہیں ہوتی ایک سوچ کی ہوتی ہے آج میرے ساتھ وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر تشریف فرما ہیں جن کا تعلق مسلم لیگ نون سے ہے لیکن خاندانی انسان ہیں یہی تو ہمارا پیغام ہے کہ کشمیر کے معاملے پر سیاست نہ کی جائے اور سیاسی معاملات اپنی حد تک رکھیں
دریں اثنا وزیر خارجہ ایوان صدر بھی گئے جہاں صدر ریاست سردار مسعود خان نے انکا خیر مقدم کیا اس موقع پر میڈیا ٹاک کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ امہ کے محافظوں کے مفادات بھارت سے منسلک ہیں پاکستانی قوم احمقوں کی جنت میں نہ رہے کیونکہ اقوام متحدہ میں کوئی پاکستان کے لیے ہار لے کر نہیں کھڑا، مسئلہ کشمیر پر سلامتی کونسل کا کوئی بھی مستقل رکن پاکستان کی راہ میں رکاوٹ بن سکتا ہے۔ اس لئے ہمیں بہترین حکمت عملی سے کام کرنا ہوگا. آج امہ کی بات تو بہت کی جاتی ہے مگر امہ کے محافظوں کے مفادات بھارت سے منسلک ہیں، انہوں نے وہاں بھاری سرمایہ کاری کر رکھی ہے۔ مقبوضہ کشمیر پر سیکیورٹی کونسل میں جانا سب سے اہم فیصلہ ہےاور چین نے کشمیریوں کامقدمہ پیش کرنے میں مکمل تعاون کا یقین دلایا ہے۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ ہم کشمیریوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں اور ہم جوپیغام باہردینا چاہتے تھے وہ ہم بھیجنے میں کامیاب رہے وزیراعظم دنیا بھر کی قیادت سے بات کر رہے ہیں، سیکیورٹی کونسل کیلئےحمایت حاصل کی جارہی ہے انہوں نے کہا کہ کشمیر کے ایشو پر سیاست نہیں ہونی چاہیے ، کشمیر کے جھنڈے تلے پاکستان کی سیاست سے فائدہ نہیں ہوگا۔

Comments

comments