اپوزیشن جماعتوں کی کال پر ملک بھر کی طرح وفاقی دارالحکومت میں یوم سیاہ میں منایاگیا

  • IMG-20190725-WA0355.jpg

اسلام آباد
اپوزیشن جماعتوں کی کال پر ملک بھر کی طرح وفاقی دارالحکومت اسلام آبادمیں بھی یوم سیاہ جمعیت علماء اسلام کی میزبانی میں منایاگیاجڑواں شہروں کے مختلف علاقوں سے اپوزیشن جماعتوں کی ریلیاں رکاوٹوں کے باوجودنیشنل پر یس کلب اسلام آبادپہنچیں جہاں احتجاجی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں کے راہنماؤں نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ25جولائی 2018تاریخ کاوہ سیاہ دن ہے جس دن عوامی مینڈیٹ کوروند کرجعلی حکومت کووجود دیاگیاجس نے پاکستان کوبے روزگاری،مہنگائی اور معاشی بحران سے دوچارکردیاپاکستان کی اسلامی شناخت اور نظریاتی تشخص کوشدید نقصان پہنچایاگیاملک بھر میں قادیانی نیٹ ورک متحرک ہوچکے قادیانیوں سے متعلق آئینی ترمیم کی کوشش کی گئی توکسی قربانی سے دریغ نہیں کیاجائے گاملک اس وقت شدید معاشی بحرانوں کی زدمیں ہے 25جولائی کوعوامی مینڈیٹ پر ڈاکہ ڈال کر جعلی حکومت بنائی گئی پاکستان میں اس وقت سول مارشل لاء کی زد میں ہے احتساب کے نام پر اپوزیشن جماعتوں کو سیاسی انتقام کانشانہ بنایا جارہاہے میڈیاپر اپوزیشن کے احتجاج کوسنسر کیاجارہاہے کرپشن کے خوشنماء نعرے لگانے والوں کی کرپٹ مافیاز سے ملکر حکومت بنائی ان خیالات کااظہار جے یوآئی اسلام آبادکے امیر مولانا عبدالمجیدہزاروی،ممتاز روحانی شخصیت مولاناپیر عزیز الرحمن ہزاروی،مسلم لیگ ن کے راہنماء انجم عقیل،سابق وفاقی وزیر طارق فضل چوہدری،سابق ایم این اے ملک ابرار احمد،پاکستان پیپلزپارٹی ڈسٹرکٹ اسلام آبادکے صدرشکیل عباسی،سٹی صدرشہزادہ افتخارحسین،جنرل سیکرٹری اظہرخان،اے این پی کے راہنماء ضربت خان،بی این پی اسلام آبادکے پریزیڈنٹ عبدالقیوم اچکزئی،جے یوآئی اسلام آبادکے جنرل سیکرٹری مفتی محمدعبداللہ،سنئیر نائب امیر مفتی اویس عزیز،راجہ وقار ممتاز،سجادعباسی،ڈاکٹر حافظ ضیاء الرحمن ؤ،ارشد عباسی،مولاناعبدالکریم،مولانامحمدطیب فاروقی،مفتی مسرت اقبال عباسی،مولاناظہیرالدین امازئی ودیگر نے خطاب کرتے ہوئے کیاراہنماؤں نے کہاکہ 25جولائی 2018کادن پاکستان کی تاریخ کاوہ سیاہ دن ہے جس دن عوامی مینڈیٹ کو روندکرجعلی حکومت تشکیل دی گئی جس نے پاکستان کومہنگائی بے روزگاری اور معاشی بحرانوں کے تحفے دئیے یوم سیاہ کی احتجاجی تقریب ممتاز روحانی شخصیت مولاناپیرعزیزالرحمن ہزاروی کی رقت آمیز دعاسے اختتام پذیر ہوئی

Comments

comments