سپریم کورٹ کا اسلام آبادکے رفاعی پلاٹ پر قائم پلازہ ضبط کرنے کا حکم

سپریم کورٹ نے اسلام آبادکے رفاعی پلاٹ پر قائم پلازہ ضبط کرنے کا حکم دیتے ہوئے پلازہ کی خرید و فروخت پر پابندی لگا دی، عدالت نے فیصلہ میں قراردیا کہ لارجر بنچ جمعہ کو) ملزموں کی بریت کے فیصلے کا جائزہ لے گا۔چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے اسلام آباد کے رفاعی پلاٹ پر پلازے کی تعمیر سے متعلق کیس کی سماعت کا آغاز کیا تو ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے بتایا کہ پلاٹ میں سوئمنگ پول کی جگہ پر تین منزلہ پلازہ بن چکا ہے جس کے گراونڈ فلور پر 33 د کانیں ہیں۔چیف جسٹس نے کہاکہ یہ سیدھا نیب کیس ہے اورسی ڈی اے بھی متعلقہ افسران کو گرفتار کرے۔ پلازہ گرا دیں ،نہیں تو سی ڈی اے تحویل میں لے گا ،ان کا کہنا تھا کہ کسی کے باپ کا مال ہے جو رفاعی پلاٹ پر قبضہ کر لے ۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہاکہ سوئمنگ پول بھی تاحال فعال نہیں ہو سکااورعدالت فوجداری کیس میں پلازہ مالک کو بری کر چکی ہے۔ اس دوران پلازہ کے مالک کی طرف سے وکیل نے موقف اپنایاکہ مذکورہ پلاٹ کمرشل ایریا میں ہے اور اس پلاٹ پر سی ڈی اے نے اضافی تعمیرات کی منظوری دی گرلز کالج کے سامنے ہونے کی وجہ سے عمارت بنانے کا کہا گیا،

Comments

comments