انتخابات ملتوی کرنے کے فیصلے کیخلاف عدالت کا دروازہ کھٹکھٹانے کا اعلان شیخ رشید

  • 449270_89836059.jpg

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ امیداور کی موت کے سوا الیکشن ملتوی نہیں ہو سکتا، سازش کر کے انتخاب روکا جا رہا ہے۔

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے راولپنڈی سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 60 میں انتخابات ملتوی کرنے کے فیصلے کیخلاف عدالت کا دروازہ کھٹکھٹانے کا اعلان کر دیا ہے۔

شیخ رشید نے کہا ہے کہ اس سے بڑی دھاندلی کوئی نہیں ہو سکتی، کوئی طاقت آئین وقانون کے تحت الیکشن نہیں روک سکتی، مجھے اللہ تعالیٰ سے پوری امید ہے کہ قانون حقیقت کا راستہ اختیار کرے گا۔ ایک حلقے کے انتخاب کوسازش کے تحت روکا جارہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے ٹینٹ کا خرچہ بھی دیدیا اور پولنگ ایجنٹ بھی ڈکلیئر کر چکے ہیں، میں چیف جسٹس صاحب سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ ازخود نوٹس لیں، حنیف عباسی نے جو بویا وہی کاٹا، جمہوریت کے لیے جیل نہیں گیا۔

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے چیف جسٹس سے این  اے 60 راولپنڈی میں الیکشن ملتوی ہونے کا نوٹس لینے کا مطالبہ کر دیا ہے۔

راولپنڈی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیخ رشید نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 60 میں الیکشن ملتوی کرنے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ایک حلقے کے الیکشن کو سازش کے تحت روکا جا رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کوئی طاقت آئین کے تحت الیکشن نہیں روک سکتی، کسی حلقے میں فائرنگ اور ہلاکت ہو تو آر او الیکشن روک سکتا ہے۔

حنیف عباسی کی نااہلی کے بعد این اے 60 میں انتخابات مؤخر

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے حلقہ 60 کا الیکشن ملتوی کر کے غیر آئینی کام کیا، امید ہے الیکشن کمیشن آئینی راستہ اختیار کرے گا۔

شیخ رشید نے چیف جسٹس آف پاکستان سے این اے 60 میں الیکشن متلوی ہونے کا نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے اور عمران خان کو ہرانے کی سازش کی جا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں الیکشن روکنے کا کوئی شوق نہیں تھا، 500 کلو ایفی ڈرین کے کیس پر فیصلہ ہوا جو پہلے 10 اور پھر 22 جولائی کو کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر یہ اختیار استعمال کرنا تھا تو کیپٹن (ر) صفدر کے حلقے میں الیکشن ملتوی کیوں نہ ہوئے؟ الیکشن کمیشن نے اگر آئینی قدم اٹھایا ہے تو کل ہائی کورٹ آکر بتائے۔

Comments

comments