جنڈ اسپیشل پرائس مجسٹریٹ کی من مانیاں عروج پر۔

جنڈ
اسپیشل پرائس مجسٹریٹ کی من مانیاں عروج پر۔

نو جولائی کو اسپیشل پرائس مجسٹریٹ جنڈ کے نواحی گاؤں چھب پرانی منڈی اور نیو مارکیٹ کے کئی دکانداروں سے دو ہزار سے لیکر پانچ ہزار روپے تک جرمانہ وصول کیا.نوجوان دکاندار عبدالرحمن المعروف مانی نے اسپیشل پرائس مجسٹریٹ سے یہ کہہ کر سروس کارڈ دکھانے کا مطالبہ کیا کہ ہمیں کیسے پتہ چلے کہ آپ اصلی میجسٹریٹ ہیں یا نقلی…؟ مجسٹریٹ نے اس نوجوان دکاندار کے مطالبے پہ برہمی کا اظہار کرتے ہوئے اسکے اوپر ایف آئی آر درج کرنے کی دھمکی دی .
ایک نوجوان دکاندار سعید مرجان جو اس ساری کاروائی کی ویڈیو بنا رہا تھا اسے بھی دھمکی دی کہ تجھے تھانہ میں بند کروادونگا. لیکن سارے دکاندار بضد تھے کہ پرائیویٹ کار نمبر CS 582 (اسلام آباد) میں آیا ہوا شخص اگر واقعی تحصیل دار ہے تو اپنی شناخت کے لئے ہمیں کارڈ دکھائے اور دوسرا مطالبہ یہ تھا کہ جو جرمانے اس نے دکانداروں سے وصول کئے ہیں اسکی رسید دی جائے. تحصیلدار دکانداروں کے اس مطالبے پہ برہمی کا اظہار کرتے ہوئے تھانے میں ایف آئی آر درج کرنے کی دھمکی بھی دی رہا تھا لیکن دکانداروں کی ان جائز ڈیمانڈز کے سامنے ہار مان گیا اور ایک دکاندار یوسف کو جرمانہ کی رسید جاری کر دی لیکن اس رسید پہ کینسل بھی لکھ دیا لیکن وصول شدہ رقم واپس نہیں کی. بعد ازاں سابق جنرل کونسلر ادریس نے تحصیلدار کا سائیڈ لیتے ہوئے
دکاندار سعید مرجان سے ویڈیو بند کروایا اور دوسرے
دکانداروں کو ڈرا دھمکا کر روانہ کر دیا اور ایجنسی والے سے تحصیلدار کو پندرہ ہزار روپے دلوا دئیے.
دس تاریخ کو تھانہ انجرا سے ویڈیو بنانے والے دکاندار سعید مرجان کی خلاف ایف آئی آر درج کردیا گیا کہ اس نے تحصیل دار کے نائب قاصد کو دال مہنگی بیچی ہے جبکہ حقیقت یہ ہے کہ سعید مرجان کی دکان بند تھی اور تحصیل دار اور اسکے نائب قاصد نے کوئی خریداری نہیں کی. اور ویڈیو بنانے کے جرم میں جھوٹا مقدمہ درج کروا دیا. اہلیان چھب نے اس معاملے پر شدید احتجاج کیا اور مطالبہ کر رہے ہیں کہ اس معاملے کی انکوائری کے لئے کمیشن بنائی جائے جو موقع پہ موجود افراد سے بیانات لیں. تاکہ حقائق سامنے آسکیں.تحصیلدار نے کس جرم میں دکانداروں سے پیسے لئے ہیں اور اگر واقعی دکاندار اشیاء مہنگے داموں فروخت کر رہے تھے تو ڈیزل ایجنسی سے کس مد میں جرمانہ وصول کیا جبکہ ڈیزل ایجنسی کا چلانا سراسر غیر قانونی ہے

Comments

comments