سینیٹ قائمہ کمیٹی ایوی ایشن کا اگلے ہفتہ پی آئی اے یونین کو بلانے کافیصلہ

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ایوی ایشن نے اگلے ہفتہ پی آئی اے یونین کو بلانے کافیصلہ کرلیا ۔ چیئرمین کمیٹی مشاہد اللہ خان نے دلچسپ تجاویز پیش کی کہ اگر کسی نے میٹرک کی ہوئی ہے تو باقی ڈگریاں جعلی ثابت ہونے پر ان کو نوکری سے نہ نکالا جائے ۔ لوگوں کو نوکری سے نکالا تو واردات پڑے گی۔ پی آئی اے کے سی ای او ارشد ملک نے انکشاف کیا ہے کہ محکمے میں ابھی بھی جعلی ڈگریوں پر پائلٹ تعینات ہیں جو لو گوں کی زندگیوں سے کھیل رہے ہیں ۔ آئی میں اصلاحات سے ہر ماہ 24کڑور77لاکھ سے زائدروپے کی بچت ہوگی ،پی آئی اے میں مزید 10جہاز شامل کریں گے۔ چھ ماہ کے اندر سیمو لیٹر پاکستان میں لگا دیں گے پائلٹ کو پاکستان کے اندر تربیت دیں گے ۔ گھوسٹ ملازمین ابھی بھی ہیں یونین نے دفاتر پر قبضہ کرکے وہاں جعلی بورڈنگ کارڈ جاری کیے کمپیوٹر پکڑے گئے جس پر ایف آئی اے میں کیس کردیاہے۔ پی آئی اے کے شیئرز 2روپے اضافہ ہوگیا ۔ پی آئی اے ہوٹل سکائی روم کے 40 کمروں پر غیر متعلقہ لوگوں نے قبضہ کیا ہوا تھا جس کو ختم کیا

Comments

comments